مدرسے کے کمسن طالبعلم کوبدفعلی میں ناکامی پر چھوٹے مولوی نے قتل کردیا


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد میں مدرسے کے کمسن طالب علم کو بدفعلی میں ناکامی پر قتل کرنے کا یکے بعد دیگرے تیسرا واقعہ سامنے آگیا۔لیاقت آباد میں جامعہ سراجیہ زین العلوم کے دس سالہ طالب علم اعجاز کو احسان نامی نوجوان نے اپنے دو ساتھیوں کی مدد سے گلے میں پھندہ ڈال کر قتل کر دیا۔ قتل کی وجہ قاتل کی مقتول کو بدفعلی کا نشانہ بنانے کی کوشش اور اس میں مقتول کے شور مچانے کی وجہ سے ناکامی بتائی جا رہی ہے۔ نیوزلائن کے مطابق مقتول اعجازنواحی علاقے چک نمبر 277گ ب کے رہائشی فلک شیر کا بیٹا تھااور مدرسہ جامعہ سراجیہ زین العلوم لیاقت آباد میں زیر تعلیم تھا۔ رات کسی وقت اسے مدرسے کے سینئر سٹوڈنٹ اور اپنا کورس قریب قریب مکمل کر چکے سولہ سالہ نوجوان احسان نے بدفعلی کا نشانہ بنانے کی کوشش کی۔ مقتول کے شور پر وہ اس میں ناکام رہا اسی دوران اس نے اپنے آزار بند سے اس کا گلا دبا دیا۔ مدرسہ انتظامیہ کی اطلاع پر پولیس نے موقع پر پہنچ کر ملزم احسان اور اس کے دو ساتھیوں شعیب اور سجاد کو حراست میں ے لیا ہے۔ پولیس کو دئیے گئے ابتدائی بیان میں ملزم احسان نے اپنے جرم کا اعتراف کیا ہے۔ ضروری کارروائی اور پوسٹ مارٹم کے بعد مقتول کی نعش ورثاء کے حوالے کر دی گئی ہے۔چند ہفتوں میں فیصل آباد یہ بدفعلی میں ناکامی پر مدرسے کے طالبعلم کے قتل کا تیسرا واقعہ ہے۔ اس سے قبل مدینہ ٹاؤن کے ایک مدرسے میں دو کمسن طالب علموں کو قتل کرنے کے واقعات سامنے آچکے ہیں۔ ان میں بھی بدفعلی میں ناکامی ہی قتل وجہ بنی تھی۔

Related posts