پنجاب سے پٹواری کلچر ختم کرنے کیلئے ریونیو اصلاحات کا فیصلہ

لاہور (نیوز لائن) پنجاب حکومت نے ریونیو ڈیپارٹمنٹ میں بنیادی نوعیت کی اور بڑے پیمانے پر اصلاحات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔پٹواری کلچر ختم کرنے کیلئے ”پٹواری“ کا عہدہ ہی ختم کردیا جائیگا جبکہ پٹواری کے متبادل کے طور پر دیہات کی سطح پر ریونیو کی ذمہ داریاں نبھانے کیلئے ویلج ریونیو آفیسر بھرتی کیا جائیگا جو گریڈ 14کا ہوگااور اس کو پبلک سروس کمیشن کے ذریعے بھرتی کیا جائیگا۔ نیوز لائن کے مطابق پنجاب حکومت نے ریونیو ڈیپارٹمنٹ (محکمہ مال) میں بڑے پیمانے پر اصلاحات لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ریونیو ڈیپارٹمنٹ کا مکمل سٹرکچر تبدیل کیا جارہا ہے۔ محکمہ مال سے پٹواری کلچر مکمل طور پر ختم کرنے کیلئے کام کیا جائیگا۔ اس سلسلے میں وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا۔ اجلاس میں محکمہ مال کی کارکردگی اور پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے معاملات کا تفصیلی جائزہ لیا گیا اور اہم فیصلے کئے گئے۔ریونیو ڈیپارٹمنٹ میں آئندہ سے پٹواری کا عہدہ مکمل طور پر ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ دیہات کی سطح پر ریونیو کی ذمہ داریاں پٹواری سے لے کر اس کی جگہ بھرتی کئے جانیوالے گریڈ 14کے ویلج آفیسر کو دینے کا فیصلہ کیا گیا۔ محکمے میں موجود تمام پٹواریوں کو گریڈ گیارہ دینے کا فیصلہ کیا گیا اور آئندہ سے ان کی بھرتی نہ کرنے کا طے کرلیا گیا۔ پٹواریوں سے تمام اختیارات بھی واپس لے لئے جائیں گے اور ان ویلج آفیسر ریونیو کے تمام امور سرانجام دیں گے۔ اجلاس میں پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے ملازمین کا سروس سٹرکچر بھی منظور کیا گیا جبکہ لاہور کی ایک تحصیل کو ریونیو کے لحاظ سے ماڈل تحصیل کا درجہ دینے کا فیصلہ ہوا۔ اس حوالے سے وزیرا علیٰ نے کمشنر لاہور کو ہدائت کی کہ وہ ماڈل تحصیل کیلئے اقدامات کریں۔ اجلاس کے دوران وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ریونیو ڈیپارٹمنٹ رشوت اور نذرانوں کی شکایات کے حوالے سے شدید ناراضگی کا اظہار کیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا کہ کرپشن کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی۔ رشوت لینے والے سرکاری افسران و ملازمین کیخلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائیگی۔

Related posts