وزیر اعظم عمران خان نے اپنی 20 رکنی کابینہ فائنل کر لی


اسلام آباد(نیوزلائن)وزیراعظم عمران خان نے اپنی 20 رکنی کابینہ فائنل کرلی ہے کابینہ میں 15 وزراء اور 5 مشیر شامل ہیں جب کہ عمران خان وزارتِ داخلہ سمیت درجن بھر وزارتیں اپنے پاس رکھیں گے۔ وفاقی کابینہ پیر کو حلف اٹھائے گی۔ نیوزلائن کے مطابق نئی کابینہ میں شاہ محمود قریشی وزیرِ خارجہ، اسد عمر وزیرخزانہ، شفقت محمود وفاقی تعلیم و قومی ورثہ جبکہ پرویز خٹک وزارتِ دفاع کا قلمدان سنبھالیں گے۔ وزارتِ اطلاعات پی ٹی آئی کے مرکزی ترجمان فواد چوہدری اور وزارتِ قانون ایم کیوایم کے رہنما بیرسٹر فروغ نسیم کے حوالے کی گئی ہے۔ شیریں مزاری کو وزیر انسانی حقوق، عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کو خواہش کے باوجود وزارت داخلہ نہ مل سکی ۔ انہیں وزیر ریلوے بنایا گیا ہے، نورالحق قادری کو وزارتِ مذہبی امور دی گئی ہے ۔ غلام سرور خان وزیر پٹرولیم، زبیدہ جلال وزیر دفاعی پیداوار، فہمید ہ مرزا وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ، ایم کیو ایم کے خالد مقبول صدیقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی، عامر کیانی وزیر نیشنل ہیلتھ سروسز اور طارق بشیر کو وزیر سیفران بنایا گیا ہے۔ امین اسلم کو مشیر ماحولیات بنادیا گیا ہے اور معروف صنعت کار عبدالرزاق داوٴد مشیر کامرس ہوں گے۔ بابر اعوان کو پارلیمانی امور کا مشیر جب کہ عشرت حسین کو مشیر برائے ادارتی اصلاحات بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ عمران خان نے وزیرداخلہ کا قلمدان اپنے پاس رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق وزارتِ داخلہ میں معاونت کے لئے دو مشیر رکھے جائیں گے جن کے لئے سابق انسپیکٹر جنرل پولیس شعیب سڈل اور ناصر درانی کے نام زیرِ غور ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے کئی اہم وزارتوں کا چارج اپنے پاس رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ،عمران خان پہلے مرحلے میں ڈیڑھ درجن وزارتوں کا قلمدان اپنے پاس رکھیں گے، جبکہ اگلے مرحلے میں پارٹی ممبران کومزیدوزارتیں تفویض کردی جائیں گی ، وزیر اعظم وزارت توانائی کے وزیر انچارج،نیشنل فوڈ سیکیورٹی،وزارت منصوبہ بندی بھی وزیر اعظم کے پاس ہوگی۔ عمران خان شماریات، نجکاری، ہاوسنگ اینڈ ورکس،میری ٹائم افیئرز،داخلہ، نارکوٹکس کنٹرول،اوورسیز پاکستانی ، پوسٹل سروسز،آبی وسائل، کیڈ ،سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ،وزارت امورکشمیر و گلگت بلتستان ،پارلیمانی امور کے وزیرانچارج ہوں گے۔

Related posts