ٹیکسٹائل یونیورسٹی کی ضلعی انتظامیہ کو ریسرچ میں تعاون کی پیشکش


فیصل آباد(نیوزلائن)نیشنل ٹیکسٹائل یونیورسٹی نے ضلعی انتظامیہ کو ریسرچ میں تعاون کی پیشکش کردی۔ یہ پیشکش ڈپٹی کمشنر فیصل آباد کے دورہ کے دوران یونیورسٹی کے ریکٹر ڈاکٹر تنویر حسین نے دی۔ ضلعی انتظامیہ کو ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کے حوالے سے خدمات کی پیش کش کرتے ہوئے ڈاکٹر تنویر کا کہنا تھا کہ ٹیکسٹائل میں ویلیو ایڈڈ موضوعات تیار کرکے ایکسپورٹ میں خاطر خواہ اضافہ کیا جاسکتا ہے اس سلسلے میں پالیسی فریم ورک اور ترجیحات کا تعین کرنے کی ضروت ہے۔انہوں نے بتایا کہ ٹیکسٹائل انسٹیٹیوٹ سے ترقی کرکے اس ادارہ نے یونیورسٹی کا درجہ حاصل کیا ہے جس میں ٹیکسٹائل کی صنعتوں کے مختلف شعبوں میں اعلی معیار کی تدریسی وتحقیقی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اس وقت ٹیکسٹائل ٹیکنالوجی کے مختلف شعبوں میں 3ہزار سے زائد طالب علم زیر تعلیم ہیں جبکہ اس یونیورسٹی کے گریجوایٹس ہر ملکی صنعت میں اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ ڈپٹی کمشنر سردار سیف اللہ ڈوگر نے یونیورسٹی کے مختلف حصوں کا دورہ کیا اور ٹیکسٹائل ایجوکیشن کے حوالے سے سہولیات اور مشینری کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر ڈی سی کا کہنا تھا کہ جدید تقاضوں کے مطابق ٹیکسٹائل صنعت کے فروغ کے لئے ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کے حوالے سے نیشنل ٹیکسٹائل یونیورسٹی کا کردار بڑی اہمیت کا حامل ہے جس سے بھرپور فائدہ اٹھانا چاہیے ۔ڈی سی نے کہا کہ ٹیکسٹائل کی صنعت اور موضوعات کی تیاری و برآمدات کے سلسلے میں فیصل آباد کو کلیدی مقام حاصل ہے اس ضمن میں موجودہ ٹیکسٹائل صنعتوں اوریونیورسٹی میں روابط کو مزید پروان چڑھانے کی ضرورت ہے تاکہ ترقی و تحقیق کے ثمرات سے فائدہ اٹھا کر برآمدات میں زیادہ سے زیادہ اضافہ کیا جاسکے۔انہوں نے کہا کہ فیشن ڈیزائننگ اور ٹیکسٹائل کی دیگر مصنوعات کو عالمی سطح پر مقبول بنانے کے لئے بزنس ماڈلز تیار کرنے کی ضرورت ہے جس کی بدولت نہ صرف کثیر زرمبادلہ کمایا جاسکتا ہے بلکہ مقامی ٹیکسٹائل انڈسٹری کی ترقی اور روزگار کے وسیع مواقع حاصل ہوں گے

Related posts