پنجاب میں بزنس فرینڈلی ماحول پیدا کررہے ہیں : میاں اسلم اقبال


فیصل آباد (نیوز لائن ) صوبائی وزیر صنعت وتجارت میاں اسلم اقبال نے کہا ہے کہ معاشی سرگرمیوں کو آگے بڑھانے کے لئے بزنس فرینڈلی ماحول فراہم کررہے ہیں اس سلسلے میں حکومت اور صنعتکاروں کے روابط کو مزید مستحکم بنایا جائے گا تاکہ مسائل دور کرکے صنعتوں کا پیہہ رواں دواں رکھا جاسکے۔انہوں نے یہ بات اپنے دورہ کے دوران فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے اراکین کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ارکان صوبائی اسمبلی لطیف نذر،میاں خیال کاسترو،ڈپٹی کمشنر سردار سیف اللہ ڈوگر،سیکرٹری انڈسٹریز ندیم الرحمن،صدرچیمبر آف کامرس سید ضیاء علمدارحسین،نائب صدورمیاں تنویر،حافظ احتشام جاویدودیگر عہدیداران بھی اس موقع پر موجود تھے۔صوبائی وزیر صنعت وتجارت نے کہا کہ سرمایہ کاری وصنعت کاری کے فروغ کے لئے ہمہ جہت نوعیت کی پالیسیز متعارف کرائی جارہی ہیں جن کے تحت صنعتوں سے متعلقہ تمام ٹیکسز کی ادائیگی کے لئے ایک فارم ترتیب دیا جارہا ہے جس کے لئے تمام سٹیک ہولڈرز پر مشتمل کمیٹی کام کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ صنعت کاری وسرمایہ کاری کے لئے وزیر اعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار کے ویژن کے مطابق حکومتی مراعات کی فراہمی کے لئے جامع ون ونڈو آپریشن متعارف کرائیں گے تاکہ ایک ہی چھت تلے صنعتوں کے اجراء کے مطابق تمام محکمانہ امور سرانجام دئیے جاسکیں۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے کاروبار کے اجراء کے لئے پانچ سالوں میں 6،ارب روپے کے قرضہ جات فراہم کئے جائیں گے اور 30لاکھ روپے کے کاروباری پلان کے لئے 80فیصد رقم حکومت پنجاب فراہم کرے گی۔اس ضمن میں خواتین کو کاروبار کی طرف راغب کرنے کے لئے زیادہ مراعات دی جارہی ہیں۔صوبائی وزیر نے کہا کہ ٹیوٹا اوردیگر ٹیکنیکل اداروں میں پانچ لاکھ افراد کو ہنرمند بنایا جائے گا جبکہ لاہور میں موجود ٹیکنکل یونیورسٹی کو اپ گریڈ کرنے کے علاوہ منڈی بہاؤ الدین،ڈیرہ غازی خان اور راولپنڈی میں ٹیکنیکل یونیورسٹیز کا قیام عمل میں لانے کی منصوبہ بندی کی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ نئی انڈسٹریل زونز کے قیام کے علاوہ موجودہ انڈسٹریل اسٹیٹس میں درکار وسائل وضروریات کو یقینی بنائیں گے جبکہ انڈسٹریل اسٹیٹ کے ساتھ لیبر کالونیز کا قیام بھی عمل میں لایا جائے گا جو نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کا حصہ ہونگی۔صوبائی وزیرنے کہا کہ موجودہ حکومت نے کاروباری سرگرمیوں کو فروغ دینے کیلئے منی بجٹ میں سرمایہ کاروں کو خاطر خواہ ریلیف دیا ہے۔اس سلسلے میں ای بزنس کے طریقہ کارکو فروغ دینے کے لئے انفارمیشن ٹیکنالوجی سے بھرپور فائدہ اٹھائیں گے۔صوبائی وزیر نے چیمبر آف کامرس کے مطالبہ پر فیڈمک کے زیراہتمام ایم تھری انڈسٹریل اسٹیٹ میں 70،ایکڑ اراضی پر سٹیٹ آف دی آرٹ ایکسپو سنٹر کے قیام کا اعلان کیا اور کہا کہ اس نوعیت کے ایکسپو سنٹر سیالکوٹ اورملتان میں بھی قائم کرینگے۔انہوں نے صنعتکاروں کو درپیش مسائل کے حل کے لئے موثر اقدامات کرنے کا یقین دلاتے ہوئے کہا کہ ایم تھری انڈسٹریل اسٹیٹ میں بجلی اور گیس ودیگر سہولیات فراہم کی جائیں گی جبکہ سمال انڈسٹریل اسٹیٹ کے مسائل کے حل کے لئے محکمہ کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ صنعتوں کو فروغ ملے گا تو معاشی ترقی ہوگی۔روزگارکے مواقع پیدا ہونگے اور ایکسپورٹ میں اضافہ ہوگا۔اس مقصد کے لئے سرمایہ کاروں کو زیادہ سے زیادہ سہولت فراہم کرنے کے لئے جرات مند فیصلے کئے جائیں گے۔انہوں نے پنجاب فوڈ اتھارٹی اور پنجاب ریونیو اتھارٹی سے متعلق تحفظات کو دور کرنے کے لئے حکومتی سطح پر اقدامات کرنے کا یقین دلایا۔صوبائی وزیر نے کہا کہ صنعتوں کو انسپکشن لیس بنائیں گے اس سلسلے میں واضح پالیسی وضع کرینگے تاکہ مختلف محکموں کے ملازمین پریشان نہ کرسکیں۔قبل ازیں خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے صدر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسری سید ضیاء علمدار حسین نے صنعتکاروں وسرمایہ کاروں کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا اور کہا کہ نیا پاکستان ہاؤسنگ سکیم کے تحت فیصل آباد کو ترجیح دی جائے۔صدر چیمبر نے منی بجٹ میں کاروباری مراعات کی فراہمی کیلئے حکومتی اقدامات کو سراہتے ہوئے امید ظاہر کی کہ اب کاروباری سرگرمیاں اور ایکسپورٹ بہتر ہوگی۔انہوں نے پنجاب فوڈ اتھارٹی اور پنجاب ریونیو اتھارٹی سے متعلقہ کاروباری افراد کو درپیش مشکلات سے بھی آگاہ کیا۔قبل ازیں صوبائی وزیر صنعت وتجارت میاں اسلم اقبال نے ساہیانوالہ کے قریب مجوزہ علامہ اقبال انڈسٹریل زون کی جگہ کا بھی معائنہ کیا جو تین ہزار سے زائد ایکڑ رقبہ پر قائم کی جائے گی۔انہوں نے ایم تھری انڈسٹریل اسٹیٹ کا بھی دورہ کیا۔فیڈمک کے چیف آپریٹننگ آفیسر عامر سلیمی نے انہیں انڈسٹریل اسٹیٹ میں میگا انڈسٹریز کے قیام اوربعض مسائل کے حوالے سے بریفنگ دی۔صوبائی وزیرنے چائنیز سرمایہ کاروں کے زیرانتظام سرامکس انڈسٹری اورترکی کے زیراہتمام ہائی جین ڈسپوزل وڈیٹرجنٹس انڈسٹری کا بھی معائنہ کیا جو بالترتیب 50ملین اور 336ملین ڈالر سے قائم کی گئی ہیں۔انہوں نے غیر ملکی سرمایہ کاروں کی دلچسپی کو سراہا اور کہا کہ انہیں مختلف شعبوں میں انڈسٹری کے قیام کے لئے تمام تر سہولیات فراہم کرینگے۔

Related posts