پنجاب میں کرپشن کا خاتمہ سب سے بڑا چیلنج ہے: عمران خان


لاہور(نیوزلائن)وزیراعظم پاکستان عمران خان نے پنجاب میں بلدیاتی نظام فوری تبدیل کرنے اور اورنج لائن ٹرین سمیت تمام جاری ترقیاتی منصوبوں کا آڈٹ کرانے کی ہدایت کر دی۔ پنجاب کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِاعظم نے حکم دیا کہ 100 دن کے منصوبے پر عملدرآمد تیزی سے جاری رکھا جائے اور صحت، تعلیم اور صاف پانی کی فراہمی کے شعبوں میں تبدیلی نظر آنی چاہئے ۔ تمام وزرا اپنے اپنے محکموں میں سادگی کو فروغ دیں۔ وزیر اعظم نے پنجاب کابینہ کو اپنے وژن سے آگاہ کرتے ہوے ہدایت کی کہ پنجاب حکومت کی کارکردگی دوسرے صوبوں کیلئے قابل تقلید ہونی چاہئے ۔ پنجاب میں بدعنوانی کا خاتمہ سب سے بڑا چیلنج ہے ۔ کابینہ ارکان بدعنوانیوں کی نشاندہی کو اپنی پہلی ترجیح بنائیں۔ اس معاملے میں کوئی کوتاہی قابل قبول نہ ہو گی۔ وزیراعظم نے پنجاب میں بلدیاتی نظام فوری تبدیل کرنے اور اورنج لائن ٹرین سمیت تمام جاری ترقیاتی منصوبوں کا آڈٹ کرانے کا حکم بھی دیا۔ وزیراعظم نے پنجاب میں زمینوں پر قبضے اور تجاوزات پر گہری تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ قبضوں اور تجاوزات میں مافیاز اور بڑے گروپس ملوث ہیں، ان کیخلاف کارروائی کی جائے ۔ صوبائی حکومت کی بھرپورمدد کی جائے گی۔عمران خان نے کہا کفایت شعاری اور سادگی کو اختیار کرنے کی ضرورت ہے ، کابینہ ارکان ٹیکس دہندگان کا پیسہ بچاتے ہوئے مثال قائم کریں۔کسی بھی وزیر کے ساتھ پروٹوکول برداشت نہیں کیا جائے گا۔ہمیں اپنے اخراجات معقول رکھتے ہوئے انسانی ترقی پر سرمایہ کاری کرنی ہے ، پاکستان کا خطے میں سب سے کم ہیومن ڈویلپمنٹ انڈیکس ہے ۔وزیراعظم نے پنجاب کابینہ کے ارکان کو ہدایت کی کہ 100 روزہ ایجنڈے پر عملدرآمد کیلئے انتھک کام کریں۔ پنجاب کا وقتاً فوقتاً دورہ کروں گا اور سو دن کے ایجنڈے کا جائزہ لوں گا۔ کابینہ کے ارکان نے وزیراعظم کو اپنے محکموں کے بارے میں بریفنگ دی ۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے وزیراعظم کی آ مد کا خیر مقدم کرتے ہوئے ان کا شکریہ ادا کیا اور صوبے کو ان کے وژن کے مطابق چلانے کی تیاریوں سے آگاہ کیا۔
وزیراعظم نے بعد ازاں گرین پاکستان مہم کا بھی آغاز کیا اور وزیراعلیٰ ہاؤس میں پودا لگایا۔اس موقع پروزیراعظم نے کہا کہ پنجاب پولیس کو سیاسی اثرورسوخ سے آزاد کرائیں گے ، سرکاری افسروں کو بھاری تنخواہوں پربھرتی نہیں کیا جائے گا۔ پنجاب میں خیبر پختونخوا طرز پر نیا بلدیاتی نظام متعارف کرائیں گے ، سبسڈی پر چلنے والے منصوبوں کا فوری آڈٹ کرایا جائے گا۔بعد ازاں وزیراعظم نے ایوان وزیراعلیٰ میں صوبائی سیکرٹریز سے بھی ملاقات کی۔ وزیراعظم نے کہا کہ ملک کو چلانے کیلئے بیوروکریسی کا کردار ہمیشہ اہم رہا ہے ۔ہم آپ کو کارکردگی دکھانے کیلئے بھرپور مواقع دیں گے ، بیوروکریسی کے کام میں مداخلت نہیں کی جائے گی، امید ہے بیورکریسی عزم اور تندہی سے کام کرے گی۔وزیراعظم نے کہا مشکل حالات میں ملک چلانے کیلئے اہم فیصلے کرنا پڑتے ہیں، ہماری حکومت کاایجنڈا ہے ملک کو بہتر انداز میں چلانے کیلئے سب ملکر کام کریں۔وزیراعظم نے سیکرٹریز کو ہدایت کی کہ شفافیت، نتائج اور میرٹ کو اپنی ترجیحات بنالیں۔ وزیراعظم نے زمان پارک لاہور میں نادرا متاثرین کے احتجاج کا نوٹس لیتے ہوئے چیئرمین نادرا کو متاثر ین کے مسائل کے حل کیلئے اقدامات کرنے کی ہدایت کر دی ۔ وزیراعظم نے گزشتہ رات لاہور آمد پر شہریوں کو غیر ضروری رکاوٹوں کی وجہ سے درپیش مسائل کانوٹس لیتے ہوئے صوبائی حکومت اور ضلعی انتظامیہ کو شہریوں کو سہولت فراہم کرنے اور شہریوں کی آسانی کیلئے غیر ضروری فوری رکاوٹیں دور کرنے کی ہدایت کر دی ۔ بعدازاں وزیر اعظم عمران خان اپنی اہلیہ کے ساتھ واپس اسلام آباد روانہ ہو گئے ۔ اعلیٰ حکومتی شخصیات نے ائیر پورٹ پر رخصت کیا ۔

Related posts