پولیس یونیورسٹیوں، کالجوں میں منشیات کی روک تھام میں ناکام


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد پولیس تعلیمی اداروں میں منشیات کی روک تھام کیلئے اقدامات کرنے میں بری طرح ناکام ثابت ہوئی ہے۔ شہر کے درجنوں کالجوں اور یونیورسٹیوں میں منشیات کے استعمال کی شکایات سامنے آچکی ہیں مگر اس سب کے باوجود پولیس موثر اقدامات اٹھانے میں کامیاب نہیں ہو پائی۔ نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد میں بہت بڑے پیمانے پر یونیورسٹیوں اور کالجوں میں منشیات فروشی اور استعمال کئے جانے کی شکایات سامنے آرہی تھیں۔ سمن آباد میں کالج روڈ کے تمام کالجز میں وہاں کے عملے اور اساتذہ کی ملی بھگت سے منشیات فروشی کی شکایات سامنے آچکی ہیں۔ فیصل آباد میڈیکل یونیورسٹی میں بھی منشیات فروشی اور استعمال کی رپورٹس سامنے آچکی ہیں۔ زرعی یونیورسٹی کے حوالے سے بھی ایسی ہی شکایات پولیس کو مل چکی ہیں۔ جبکہ شہر کے بڑے پرائیویٹ کالجز اور پرائیویٹ یونیورسٹیوں کے حوالے سے بھی ایسی ہی رپورٹس منظر عام پر آئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق سابق سی پی او فیصل آباد اطہر اسماعیل نے ان رپورٹس پر ایکشن لیتے ہوئے پولیس کی خصوصی ٹیمیں تشکیل دی تھیں اور بڑے پیمانے پر یونیورسٹیوں و کالجز میں منشیات فروشی کرنے والے گروہ کیخلاف اقدامات اٹھانا شروع کئے ہی تھے کہ انتخابات کا بگل بج گیا اور سی پی او سمیت پولیس کے تمام اعلیٰ افسران کے تبادلے کردئیے گئے۔ الیکشن کیلئے دور دراز کے علاقوں سے آنیوالے افسران اور انسپکٹرز امن و امان اور انتخابی عمل پرامن بنانے میں مگن ہو گئے اور یونیورسٹیوں و کالجز میں منشیات فروشی کرنیوالے عناصر کیخلاف آپریشن مؤثر انداز میں ممکن نہ ہوسکا۔ ذرائع کے مطابق یونیورسٹیوں اور کالجز میں اب بھی بڑے پیمانے پر منشیات فروشی ہو رہی ہے اور اس میں کئی نام نہاد شرفاء بھی ملوث پائے جا رہے ہیں۔

Related posts