پٹواری کی کھلی بلیک میلنگ‘ کروڑوں رشوت اور زمینوں پر قبضے


فیصل آباد(ندیم جاوید) فیصل آبادکی اہم سیاسی شخصیات کا چہیتا پٹواری شہریوں کو بلیک میل کرنے‘ بھاری رشوت لینے‘ بوگس ’’پرت ‘‘تیار کرنے‘ جعلی اندراجات کرنے اور شہریوں کو بلیک میل کرکے ان سے بھتہ وصول کرنے میں ملوث نکلا۔ ایک شہری کو بلیک میل کرکے 70لاکھ روپے بھتہ وصول کرنے اور زمین کا ٹکڑا ہتھیا نے ‘ جعلی اندراجات ‘ بوگس انٹریوں‘ بوگس پرت تیار کرنے کے ثبوت بھی سامنے آگئے۔رشوت لینے‘ جعلی انتقال کرنے ‘ بوگس انٹریاں کرنے‘ شہری کو کھلے لفظوں بلیک میل کرنے ‘ زمین کے ملکیتی ریکارڈ میں ردوبدل کرنے اور بوگس اراضی ملکیتی سرٹیفکیٹ جاری کرنے کے باوجود اعلیٰ سیاسی وی بیوروکریٹک حلقوں تک رسائی رکھنے والے پٹواری سے سبھی خوفزدہ ہیں اوراس کیخلاف کوئی ایکشن لینے کو تیار نہیں ہے ۔ متاثرہ شہری انصاف کیلئے دربدر خوار ہورہے ہیں ۔ نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد کے ایک پٹواری ضیغم الحق کے بارے میں رپورٹس سامنے آئی ہیں کہ اس نے چک نمبر 245ج ب اور چک نمبر 67ج کے اراضی ریکارڈ میں بڑے پیمانے پر گھپلے کئے ہیں۔ 67ج ب میں تعیناتی کے دوران اس نے بڑے بڑے گھپلے کئے رشوت کا بازار گرم کئے رکھا مگر اس کیخلاف کوئی ایکشن نہیں ہو سکا جس کی وجہ اسے بااثر سیاسی شخصیات اور اعلیٰ بیوروکریسی کی پشت پناہی بتائی جاتی ہے۔ نیوزلائن کو ملنے والی دستاویزات میں سامنے آیا ہے کہ پٹواری ضیغم الحق نے 67ج ب میں شہری کی چار ایکڑ اراضی کو اچانک ’’پرت ‘‘میں کم ظاہر کیا اور ریکارڈ میں زمین کے مالک کیساتھ ایک جعلی اندراج ظاہر کردیا۔ شہری نے اس پر احتجاج کیا تو اسے بلیک میل کیا جانے لگا کہ اندراجات ٹھیک کرنے اور اپنی ہی اراضی واپس اپنے نام کروانے کے لئے بھتہ دے ۔شہری نے مجبور ہو کر 50لاکھ روپے بھتہ دے کر جان بخشی کروائی۔ اسی شہری کو ایک دوسرے معاملے میں بلیک میل کرکے مزید رقم اینٹھی۔ نیوزلائن کے مطابق ضیغم پٹواری کے بارے میں سامنے آیا ہے کہ 67ج ب کے انتقال نمبر 12594میں بھاری نذرانہ بھی لیا جبکہ پھر بھی شہری کی زمین کا ایک بڑا حصہ اپنے ہی ایک بندے کے نام منتقل کرکے زمین کے اصل مالک کو بلیک میل کرتا رہا۔ ذرائع کے مطابق 67ج ب کے مربع نمبر 49میں ہونیوالے انتقال نمبر 13670‘ 13452اور 14846میں بھی گھپلے کئے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ بھی متعدد انتقال جعلی اور بوگس ہونے کی رپورٹس ہیں۔ ضیغم پٹواری کے حوالے سے یہ بھی سامنے آیا ہے کہ اسے اعلیٰ سیاسی شخصیات اور بڑے بڑے بیوروکریٹس کی پشت پناہی حاصل ہے ۔ اس نے علاقے میں جعلی انتقالات‘ بوگس انٹریوں‘ قبضہ مافیاز کی سرپرستی ‘ بلیک میلنگ ‘بھتہ خوری کا بازار گرم کر رکھا ہے۔ اس کیخلاف شکایات ہونے کے باوجود حکام کارروائی کرنے سے گریزاں ہیں۔

Related posts