پی سی بی میں اربوں کے گھپلے:کرپشن چھپانے کیلئے آڈٹ سے گریزاں


فیصل آباد(احمد یٰسین)نجم سیٹھی دور میں پاکستان کرکٹ بورڈ میں اربوں روپے کے گھپلوں کا انکشاف ہوا ہے۔ نواز شریف کے چہیتے چیئرمین پی سی بی کی مدت تعیناتی کے دوران کھلے ہاتھوں سے قومی خزانہ لٹایا جاتا رہا۔ افسروں نے اربوں روپے اللوں تللوں پر اڑا دیا۔ کرپشن چھپانے کیلئے کئی سال سے پی سی بی کے فنڈز کا آڈٹ ہی نہیں کروایا گیا۔ نیوزلائن کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ میں کئی سال سے فنڈز کی لوٹ سیل لگی ہوئی ہے۔ ملک میں سب سے زیادہ مقبول کھیل کرکٹ کے معاملات کو چلانے کے ذمہ دار ادارے میں قومی خزانے کا گزشتہ کئی سال سے بے دریغ اور غیرقانونی استعمال کیا جا رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی کے بہت سے افسران استحقاق نہ ہونے کے باوجود غیرملکی دورے کرتے رہے۔ کوچز کو غیرقانونی مراعات اور اضافی رقوم دی جاتی رہیں۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی کا گیم ڈویلپمنٹ ونگ ‘ قومی ٹیم کے معاملات‘ اکیڈمی کے معاملات‘ کوچز کے اخراجات ‘ جونیئر ٹیم کے معاملات میں ہیراپھیری اور قواعد کی بڑے پیمانے پر خلاف ورزی ہوئی ہے۔ پی سی بی حکام نے غیرقانونی غیرملکی دورے بھی کئے۔ ملک میں ٹیلنٹ کی تلاش کیلئے وقت نہ ہونے کا بہانہ کرنے والے سلیکشن کمیٹی کے ارکان استحقاق نہ ہونے کے باوجود غیرقانونی غیر ملکی دورے کرتے رہے۔ ذرائع کے مطابق کئی سالوں سے پی سی بی کا آڈٹ نہیں کروایا گیا۔آڈٹ نہ ہونے سے پی سی بی کے گھپلے چھپے ہوئے ہیں اور کرپشن بارے سوالات نہیں اٹھ رہے۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی کا پانچ سال کا آڈٹ کروایا جائے تو ایسے ایسے معاملات ‘ کرپشن‘ ہیراپھیری اور بے قاعدگیاں بے نقاب ہوں گی کہ پی سی بی حکام کو منہ چھپانے کو نہیں ملے گا۔

Related posts