چوہدری شیر علی پی پی 115سے صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑیں گے


فیصل آباد(احمد یٰسین)مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما ‘ بابائے بلدیات کے طور پر جانے جاتے چوہدری شیر علی نے پی پی 115سے صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ شہر کے مرکزی آٹھ بازاروں‘سرسید ٹاؤن ‘ جھال چوک‘ ناظم آباد‘ اور جھنگ روڈ کی غربی سائیڈ کے علاقوں پر مشتمل اس حلقے میں چوہدری شیر علی نے اپنے ہم خیال دوستوں سے مشاورت بھی شروع کررکھی ہے۔ ماضی میں اس حلقے کا بڑا حصہ رانا ثناء اللہ کے حلقے میں آتا تھا۔ خود چوہدری شیر علی کی رہائش گاہ والا علاقہ بھی رانا ثناء اللہ کے حلقہ پی پی 70میں آتا تھا مگر اب رانا ثناء اللہ کا حلقہ سمن آباد اور ناولٹی پل کے دوسری طرف کے علاقوں پر مشتمل ہوگیا ہے۔ جس کے بعد چوہدری شیر علی کیلئے ان کے گھر والے علاقوں ‘ شہر کے مرکزی آٹھ بازاروں‘ اور جھنگ روڈ کے غربی طراف کی آبادیوں پر مشتمل اس حلقے میں الیکشن لڑنا آسان ہو گیا ہے۔ پی پی 115کے علاقے ماضی میں پی پی 70‘ پی پی 71‘ پی پی 68اور پی پی 72میں شامل رہے ہیں۔چوہدری شیر علی کے قریبی حلقوں کے مطابق ماضی میں چوہدری شیر علی ان علاقوں سے صوبائی اسمبلی اور قومی اسمبلی کا الیکشن لڑتے رہے ہیں۔ اس حلقے میں الیکشن لڑنے کے حوالے سے مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی نواز ملک بھی سوچ بچار کررہے ہیں ۔ مگر چوہدری شیر علی کے میدان میں کودنے سے انہیں کسی دوسرے حلقے میں جانا پڑے گا۔ذرائع کے مطابق چوہدری شیر علی الیکشن میں حصہ لینے بارے سنجیدگی سے غور کر رہے ہیں اور اس بارے انہوں نے میاں نواز شریف کو بھی اعتماد میں لے لیا ہے۔ میاں نواز شریف کی طرف سے بھی چوہدری شیر علی کو گرین سگنل مل گیا ہے۔ چوہدری شیر علی کے خود انتخابی میدان میں کودنے سے شہر میں ن لیگ کے رانا ثناء اللہ گروپ کو دھچکا پہنچا ہے ۔ چوہدری شیر علی جس حلقے سے میدان میں کودنا چاہتے ہیں یہ حلقہ ماضی میں انکا اپنا حلقہ انتخاب رہا ہے جبکہ 2002کے بعد سے یہ علاقے کسی ایک حلقے میں نہیں رہے ہیں۔ جس کی وجہ سے نواز ملک‘ رانا ثناء اللہ سمیت کوئی بھی رہنما اس حلقے کو اپنا حلقہ قرار نہیں دے پا رہے۔ پی پی 115میں چوہدری شیر علی کے میدان میں کودنے سے نواز ملک کیلئے واحد چوائس پی پی 116رہ جائے گی۔ تاہم نواز ملک صوبائی اسمبلی کی بجائے این اے 108سے قومی اسمبلی کا الیکشن لڑنے میں زیادہ دلچسپی لے رہے ہیں۔

Related posts