ڈپٹی کمشنر نے مہنگائی کے ذمہ داروں کو سرکاری’’ چھتر چھایہ‘‘ دیدی


فیصل آباد (احمد یٰسین) ڈپٹی کمشنر فیصل آباد نے مہنگائی کے ذمہ داروں کو سرکاری چھتر چھایہ فراہم کردی۔شہر میں مہنگائی کا طوفان برپا کرنے والو ں کو پرائس کنٹرول کمیٹی میں شامل کرکے مہنگائی روکنے کی ذمہ داری بھی ان کو ہی سونپ دی۔ مہنگائی کا طوفان برپا کرنے والوں کو اشیائے خوردنی کے نرخ مقرر کرنے کی ذمہ داری بھی سونپ دی ہے اور مانیٹرنگ بھی ان کے ذریعے ہی کی جائے گی۔ڈپٹی کمشنر نے مہنگائی روکنے میں ناکامی پر انعام دیتے ہوئے مہنگائی روکنے میں ناکام رہنے والے تمام سرکاری افسران کو بھی پرائس کنٹرول کمیٹی میں شامل کرلیا ہے ۔نیوزلائن کے مطابق شہر میں مہنگائی کا طوفان برپا ہے۔ ہر بازار‘ منڈی اور مارکیٹ سے مہنگائی کی شکایات سامنے آرہی ہیں۔ پرائس کنٹرول مجسٹریٹس اور سرکاری افسران مہنگائی کنٹرول کرنے میں بری طرح ناکام ہیں۔ عوام مہنگائی سے بلبلا رہے ہیں اور پرائس کنٹرول مجسٹریٹس اشیائے خوردونوش کی قیمتوں پر قابو پانے میں بری طرح ناکام ہیں۔ایسے میں مہنگائی پر قابو پانے کیلئے ہنگامی اقدامات کرنے کی بجائے ڈپٹی کمشنر فیصل آباد سردار سیف اللہ ڈوگر نے ضلعی پرائس کنٹرول کمیٹی کی تشکیل نو کرنے کا حکم نامہ جاری کردیا ہے ۔ماضی میں کمیٹی کے اجلاسوں میں مسلسل غیرحاضر رہنے کے باوجود ڈپٹی کمشنر نو خود کو ہی کمیٹی کا چیئرمین بنا لیا ہے۔ تاہم یہ واضح نہیں کیا گیا کہ آئندہ ڈی سی کمیٹی کے اجلاسوں میں حاضری ممکن بناپائیں گے یا نہیں ۔ ڈپٹی کمشنر نے کمیٹی کا حجم انتہائی زیادہ رکھا ہے کمیٹی میں اتنے زیادہ افراد کو شامل کرلیا ہے کہ سب کے آنے پر ڈی سی آفس کے کمیٹی روم میں اجلاس بھی ممکن نہیں ہو پائے گا۔ ایکسٹرااسسٹنٹ ڈائریکٹر زرعی مارکیٹنگ کوکمیٹی کا سیکرٹری نامزد کیا گیا ہے۔ ڈی سی نے کمیٹی میں سٹی پولیس آفیسر کو بھی ممبر نامزد کیا ہے جبکہ ماضی کا ریکارڈ بتاتا ہے کہ پرائس کنٹرول کمیٹی میں سی پی او اکثر غیر حاضر ہی رہتے رہے ہیں۔ ڈی سی نے کام کرنے والوں اور ’’ویلے ‘‘ رہنے والوں میں کوئی تمیز نہیں رکھی اور مہنگائی روکنے میں مسلسل ناکام رہنے والے تمام پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو کمیٹی کے ممبران نامزد کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ایسے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو بھی کمیٹی میں شامل کیا گیا ہے جنہوں نے سال بھر میں مہنگائی کرنے والوں کیخلاف ایک بھی کارروائی نہیں کی۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)،ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت(توسیع)،ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر،اسسٹنٹ کمشنرز،ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر،ڈائریکٹر لیبر(ایسٹ اینڈ ویسٹ)،ڈپٹی ڈائریکٹر انفارمیشن،ایڈیشنل ڈائریکٹر لائیوسٹاک،ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفےئر،ڈسٹرکٹ آفیسر فوڈ سیکورٹی،ڈپٹی ڈائریکٹر فوڈ اتھارٹی،ڈی او انڈسٹریز،اسسٹنٹ ڈائریکٹر کنزیومرپروٹیکشن کونسل،چےئرمین/سیکرٹریز مارکیٹ کمیٹی،ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر،چیف آفیسر میونسپل کارپوریشن،چیف آفیسر ضلع کونسل کو بھی کمیٹی میں شامل کیا گیا ہے ۔مہنگائی کا سب سے بڑا موجب بننے والی غلہ منڈی کے آڑھتیوں کے صدر کو ڈی سی نے اپنی زیر صدارت کمیٹی میں شامل کرکے مہنگائی مافیا کے ہاتھ مضبوط کرنے کا انعام دیا ہے۔ چینی مہنگے داموں فروخت کرنے کی شکایات زبان زدعام ہیں اور کمیٹی میں ڈی سی نے صدر شوگر لنکرز ایسوسی ایشن کو شامل کرکے مہنگی چینی فراہم کرنے والوں کو نواز دیا ہے۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی بناسپتی گھی کو انسانی صحت کیلئے زہر قرار دے چکی ہے جبکہ سردار سیف اللہ ڈوگر گھی بنانے والوں کو خصوصی اہمیت دے رہے ہیں ۔ انہوں نے گھی کے نام پر زہر بنانے والوں کے نمائندے صدر گھی ملزمینوفیکچررز کو بھی کمیٹی میں شامل کرلیا ہے۔ سبزی اور فروٹ کے نرخ آسمان سے نیچے آنے کو تیار نہیں ہیں۔ سبزی منڈیوں کے آڑھتی ہر قانون کو روندنا اپنا حق سمجھتے ہیں جبکہ ڈی سی نے صدر فروٹ وسبزی منڈی سدھارکو بھی کمیٹی شامل کرکے ان پر اپنی عنائت کا ثبوت دیا ہے۔ اشیائے خوردنی مہنگے داموں فروخت کرنے کی شکایات تھمنے کا نام نہیں لے رہیں اور ڈپٹی کمشنر کریانہ مرچنٹس ایسوسی ایشن کے صدر اورجنرل سیکرٹری کے علاوہ ‘ صدراور جنرل سیکرٹری مرکزی انجمن تاجران اینڈ جنرل سٹورز،صدر انجمن تاجران ٹریڈرزونگ،چک جھمرہ،جڑانوالہ،سمندری،تاندلیانوالہ کے انجمن تاجران کے صدور کو بھی کمیٹی کا حصہ بنا رہے ہیں۔ آٹا شہر میں کہیں بھی کنٹرول نرخوں پر دستیاب نہیں ہے ۔ تاجر اس سب کا ذمہ دار فلور ملز ایسوسی ایشن کو قرار دیتے ہیں۔جبکہ ڈپٹی کمشنر کی عنایات کا رخ فلور ملز ایسوسی ایشن کی طرف ہے۔ انہوں نے چےئرمین فلورملز ایسوسی ایشن کو بھی پرائس کنٹرول کمیٹی کا حصہ بنا ڈلا ہے۔ پولٹری مصنوعات کے نرخ عام آدمی کی پہنچ میں آنے کو تیار نہیں ہیں اور آئے روز اس حوالے سے ایشو بنا رہتاہے ڈی سی نے پولٹری ایسوسی ایشن کے حاجی نجم کو کمیٹی میں شامل کرکے انہیں بھی کھل کھیلنے کا موقع فراہم کردیا ہے۔ مٹن اور بیف شہر میں کسی ایک بھی دکان پر مقررہ نرخوں پر فروخت نہیں ہو رہا۔ ڈپٹی کمشنر نے ان کے نرخوں پر قابو پانے کی کوششیں تیز کرنے اور ان کے نمائندوں کیخلاف ایکشن لینے کی بجائے انہیں مہنگائی کرنے کا انعام دیتے ہوئے مٹن وبیف ایسوسی ایشن کے نمائندے حامد بیدا کو پرائس کنٹرول کمیٹی میں شامل کرلیا ہے۔ شہر مہنگائی کا طوفان برپا کرنے والے سرمایہ داروں کو ہر طرح سے تحفظ فراہم کرنے والے چیمبر آف کامرس کے صدر کو بھی ڈی سی نے پرائس کنٹرول کمیٹی کا ممبر بنا کر ’’انعام‘‘ سے نواز دیا ہے۔ بیکرز ایسوسی ایشن کے نمائندے چوہدری ولی محمد کو بھی کمیٹی میں شمال کیا گیا ہے ۔ امجد حسین نامی شخص کو کمیٹی کا ممبر نامزد کیا گیا ہے تاہم یہ وضاحت نہیں کی گئی کہ ان کی کنزیومر ایسوسی ایشن رجسٹرڈ تنظیم ہے یا نہیں جبکہ اس این جی او کے مہنگائی میں اضافے یا کمی کے حوالے سے کردار پر بھی روشنی نہیں ڈالی گئی ۔ ڈپٹی کمشنر نے حاجی ریاض احمد‘ملک محمدندیم اصغر‘مولانا محمدنعیم‘ڈاکٹر رانا تنویر حسین‘ فرمان علی‘ ملک ظفراقبال‘ اوررضوان خادم کو بھی کمیٹی میں ممبر نامزد کیا ہے مگر ان کی شہر میں مہنگائی کا طوفان برپا کرنے کے حوالے سے خدمات سامنے نہیں لائی گئیں۔

Related posts