کسان گھی کسی زہر سے کم نہیں : کینسر جیسے امراض بانٹنے لگا


فیصل آباد (ندیم شہزاد) فیصل آباد میں بننے والے کسان گھی کو پنجاب فوڈ اتھارٹی زہریلا اور انسانی صحت کیلئے انتہائی مضر صحت قرار دے چکی ہے۔ کسان گھی ملز کی پراڈکٹ کسان کوکنگ آئل (سن فلاور) کو بھی پی ایف اے کی طرف سے زہریلا قرار دیا جا چکا ہے۔ کسان کے علاوہ بھی درجنوں گھی و کوکنگ آئل برانڈ زہریلے اور انتہائی مضر صحت قراردیا جا چکا ہے۔ نیوز لائن کے مطابق فیصل آباد سمیت ملک بھر میں بننے والی گھی اور کوکنگ آئل کے متعدد برانڈز کو پنجاب فوڈ اتھارٹی کی طرف سے مضر صحت اور زہریلا قرار دیا جا چکا ہے۔ لیبارٹری ٹیسٹ کی رپورٹس کے مطابق کسان گھی سمیت درجنوں گھی برانڈز مضر صحت اور زہریلے ہیں ۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی پہلے ہی اعلان کرچکی ہے کہ کسان گھی سمیت متعدد گھی برانڈز کینسر جیسے موذی مرض کے پھیلنے کا باعث بن رہا ہے۔ فوڈ ماہرین گھی کی بجائے کوکنگ آئل کو ترجیح دیتے ہیں تاہم اس سے بھی بہتر قرار دیا جا رہا ہے کہ دیسی گھی کو استعمال کیا جائے اور کسی بھی برانڈ کے بناسپتی گھی اور کوکنگ آئل کا استعمال ترک کردیا جائے۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی پہلے ہی بناسپتی گھی بند کرنے کے حوالے سے 2020کی ڈیڈ لائن مقرر کرکے اس کی پرسختی کیساتھ عمل کرنے کا اعلان کرچکی ہے۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی نے مارکیٹ میں مضر صحت گھی کی انسپکشن کے دوران لاکھوں لیٹر گھی اور کوکنگ آئل کو مضر صحت قراردے کر ضائع کرچکی ہے۔پی ایف اے کے تلف کردہ برانڈز میں کسان گھی اور کسان کوکنگ آئل بھی شامل تھا۔

Related posts