گندم کی غیر قانونی خریدوفروخت کرنیوالوں کیخلاف فوری کارروائی کا حکم

فیصل آباد (نیوز لائن) ڈویژن بھر میں گندم کی غیر قانونی خریداری کے خلاف فوری کارروائی عمل میں لائی جائے اس ضمن میں محکمہ خوراک کے افسران کے علاوہ ضلعی انتظامیہ کے افسران بھی فعال کردار ادا کریں۔ڈویژنل کمشنر محمود جاوید بھٹی نے وڈیو لنک کے ذریعے فیصل آباد ڈویژن کے چاروں اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز،محکمہ خوراک کے افسران کے ساتھ میٹنگ کے دوران گندم کی خریداری مہم اور دیگر انتظامی امور وحکومتی پالیسی پر عملدرآمد کاجائزہ لیتے ہوئے کہی۔ڈپٹی کمشنرز سردار سیف اللہ ڈوگر،محمد طاہر وٹو،میاں محسن رشید،سید امان انور قدوائی،ایڈیشنل کمشنر کوآرڈینیشن محبوب احمد،ڈپٹی ڈائریکٹر فوڈخالد محمود گورایہ،اسسٹنٹ کمشنر(جنرل)مصور احمد خاں نیازی اوردیگر افسران اس موقع پر موجود تھے۔ڈویژنل کمشنر نے کہا کہ گندم کی سرکاری خریداری کے سلسلے میں فیصل آباد ڈویژن کے چاروں اضلاع کے لئے مقرہ 5لاکھ میٹرک ٹن کوٹہ کا ہدف پورا کیا جائے گا اس سلسلے میں کاشتکاروں کو ہرممکن سہولیات فراہم کی جارہی ہیں تاکہ وہ اپنی گندم کی پوری امدادی قیمت حاصل کرسکیں۔انہوں نے ہدایت کی کہ گندم کے کاشتکاروں کے مفادات کا خصوصی خیال رکھتے ہوئے انہیں مڈل مین کے استحصال سے بچایا جائے۔انہوں نے کہا کہ غیر قانونی طور پر خریدی گئی گندم کو برآمد کرکے سرکاری خریداری مراکز پر لایا جائے ۔اس ضمن میں بیوپاریوں کے گوداموں کو چیک کرنے کے علاوہ گندم کے ٹرکوں کی نقل وحرکت پر کڑی نظر رکھی جائے۔انہوں نے سرکاری باردانہ کے اجراء اورخریداری مراکز پر گندم کی آمد کا ریکارڈ اپ ٹو ڈیٹ رکھنے کی ہدایت کی۔انہوں نے کہا کہ معیار پر پورا اترنے والی گندم ہی خریدی جائے اس ضمن میں ناقص معیار کی گندم خریدنے کی گنجائش نہیں تاہم مسترد کی جانے والی گندم کا مکمل ریکارڈ سنٹر پر موجود ہونا چاہیے۔ڈویژنل کمشنر نے اب تک خریدی جانے والی گندم کی بہتر نگہداشت کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ بارشوں کی صورت میں گندم کے خریداری مراکز پر خصوصی انتظامات کئے جائیں تاکہ خریداری کے عمل میں تعطل یا کاشتکاروں کو مشکلات پیش نہ آئیں۔ڈپٹی کمشنرز اورڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولرز نے اپنے اپنے اضلاع میں گندم کی خریداری مہم میں پیش رفت سے آگاہ کیا۔ڈویژنل کمشنر نے ویڈیولنک میٹنگ کے دوران انتظامی افسران کو رمضان بازاروں کے امور مزید بہتر اورمنظم انداز میں چلانے کی ہدایت کی اور کہا کہ معیاری اشیائے ضروریہ کی دستیابی کویقینی بنانے کے ساتھ ساتھ صارفین کی ہرممکن سہولیات کا خیال رکھا جائے۔انہوں نے کہا کہ سستی چینی کی طلب زیادہ ہونے کے باعث موثر حکمت عملی اختیار کی جائے تاکہ ہر صارف سستی چینی خرید سکے۔

Related posts