ہائیکورٹ بنچ احتجاج : وکلا نے کمشنر آفس کی تالا بندی کا اعلان کردیا


فیصل آباد(نیوزلائن) ہائیکورٹ بینچ کے قیام کی بابت سیکرٹری ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن چوہدری رہیل ظفر کینتھ ایڈووکیٹ کی سربراہی میں ینگ وکلاء نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج چوہدری محمد یوسف اوجلہ سے ملاقات کی اور جاری احتجاجی تحریک وعدالتی لاک ڈاؤن پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔وکلا نے بتایا کہ لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے پانچوں ڈویژنز میں رجسٹری کاؤنٹرز کے قیام کے نوٹیفکیشن کے بعد2016 میں عدالت عالیہ کے 47ججز پر مشتمل فل بینچ کا فیصلہ کالعدم ہوچکا ہے جس میں قرار دیا گیا تھا کہ اب صوبہ پنجاب میں مزید بینچز بنانے کی ضرورت نہ ہے حکومت کی جانب سے مذاکرات نہ کئے جانے پر وکلاء اور سول سوسائٹی سمیت کاروباری برادری میں بھی سخت بے چینی پائی جاتی ہے اور اگر جاری احتجاجی دھرنے کے دوران کسی بار ممبر کی شہادت ہوئی تو اسکے ذمہ دار وزیراعظم ‘گورنرو وزیراعلی پنجاب‘کمشنر اورڈپٹی کمشنر فیصل آباد ہوں گے۔ وفد نے بتایا کہ کمشنر فیصل آباد ڈویژن چاروں اضلاع میں انتظامی امور کے سربراہ ہیں لیکن انہوں نے حکومت پنجاب تک تحفظات نہ پہنچا کر انصاف نہ کیا ہے جس پر سیشن جج نے یقین دلایا کہ کمشنر فیصل آباد کے ذریعے وکلاء کی اعلی صوبائی حکام سے ملاقات کرائی جائیگی۔ سیکرٹری بار نے ایکسپریس سے گفتگو میں بتایا کہ اگر کمشنر نے پیر کو حکومت سے مذاکرات نہ کروائے تو پھر نہ صرف کمشنر آفس کی تالا بندی ہوگی بلکہ ضلع کونسل بلڈنگ پر بھی قبضہ کرکے ہائیکورٹ کا جھنڈا لہرایاجائیگا۔

Related posts