ہم نکمے ہیں: ایم ڈی ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کا کھلے عام اعتراف

فیصل آباد (نیوز لائن) فیصل آباد ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے ایم ڈی کاشف رضا نے اعتراف کیا ہے کہ ان کی کمپنی اپنے قیام کا بنیادی مقصد اور کمپنی کے افسران و اہلکار اپنا بنیادی فریضہ نبھانے میں بھی مکمل طور پر ناکام ہیں۔اور ساتھ ہی ایف ڈبلیو ایم سی کی ناقص کارکردگی کا ملبہ ڈپٹی کمشنر اور شہریوں پر ڈال دیا ۔ ایف ڈبلیو ایم سی کے چیف ایگزیکٹو کے اس اعتراف کو سماجی حلقے کمپنی اور اس کے افسران و اہلکاروں کے نکمے ہونے سے دلیل کررہے ہیں۔ اور اس اعتراف جرم کے بعد کمپنی کو ختم کرنے اور ایم ڈی سمیت بھاری تنخواہوں کے مزے لوٹنے والے افسروں کو فارغ کرنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔ اپنے ادارے کے نکمے پن کا اعتراف ایم ڈی فیصل آباد ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کاشف رضا نے فیصل آباد چیمبر آف کامرس کے خصوصی اجلاس کے دوران کیا۔ اجلاس میں کمپنی کی کارکردگی بہتر بنانے پر فوکس کرنے کی بجائے ایم ڈی وسائل کا رونا روتے رہے ۔ ایم ڈی نے اعتراف کیا کہ کمپنی ابھی تک اس قابل نہیں ہو سکی کہ شہر کا تمام کوڑا کرکٹ اکٹھا بھی کرلے۔ روزانہ سینکڑوں ٹن کوڑا کرکٹ سڑکوں گلیوں بازار میں چھوڑ دیا جاتا ہے اور ایف ڈبلیو ایم سی اسے اٹھانے سے قاصر ہے۔ ایم ڈی نے اعتراف کیا کہ کمپنی کی ناقص کارکردگی کی وجہ سے ہر مہینے 10ہزار ٹن سے زائد کوڑا کرکٹ شہر میں پڑا رہ جاتا ہے اور سالہا سال سے اس کوڑا کرکٹ کو اٹھا نے کیلئے کمپنی کچھ نہیں کرپائی۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ایف ڈبلیو ایم سی کے ورکرز روزانہ 12گھنٹے شہر میں صفائی ستھرائی کا کام کرتے ہیں اور کوڑا کرکٹ اکٹھا کرتے رہتے ہیں اس کے باوجود ماہانہ 10ہزار ٹن کوڑا کرکٹ گلیوں بازاروں میں پڑا رہ جاتا ہے۔ناکامی کا اعتراف کرنے والے الفاظ ادا کرنے کے ساتھ ہی کمپنی کے ایم ڈی نے فخریہ انداز میں بتایا کہ فیصل آبا دویسٹ مینجمنٹ کمپنی اپنے وسائل اور مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے شہر کی صفائی میں بہتری کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھا رہی ہے۔انہوںنے اپنی ناقص کارکردگی کا ملبہ ڈپٹی کمشنر پر ڈالتے ہوئے کہا کہ خراب سڑکوں کی وجہ سے ایف ڈبلیو ایم سی کی گاڑیاں خراب ہو جاتی ہیں۔ ڈپٹی کمشنر سڑکیں ٹھیک کروانے کیلئے اقدامات کریں۔انہوں نے کوڑا کرکٹ اٹھانے میں ناکامی پر ایف ڈبلیو ایم سی کی ناکامی کا غصہ عوام پر نکالنے کا غصہ ان الفاظ میں اتارنے کا عندیہ دیا کہ شہر میں کوڑا کرکٹ پھینکنے والوں کا ہم چالان کریں گے۔ تاکہ نہ کوئی کوڑا پھینکے گا اور نہ انہیں اٹھانا پڑے گا۔ کاشف رضانے چیمبر آف کامرس کے ممبران کو بتایا کہ کمپنی اپنے بنیادی فریضے ”شہر سے کوڑا کرکٹ اٹھانے اور اسے تلف کرنے ” پر فوکس کرنے کی بجائے یونیورسٹیوں میں تقریبات منعقد کرنے اور لوگوں کو ہدائت نامے دینے پر فوکس کئے ہوئے ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اس سے پہلے ہم گورنمنٹ کالج یونیورسٹی میںبھی ایک آگاہی سیشن منعقد کر چکے ہیں جبکہ وومن یونیورسٹی اور ایگری کلچر یونیورسٹی میں بھی ایسی تقریبات جلد ہو ں گی۔ اس کے علاوہ شہر کے آٹھ بازاروں کے دکانداروں کیلئے بھی ایک آگاہی سیشن منعقد کیا گیا تھا۔اس حوالے سے سماجی حلقوں کا کہنا ہے کہ ایم ڈی ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کاشف رضا اپنا فرض نبھائیں اور شہر بھر کا کوڑا کرکٹ اٹھانا یقینی بنائیں۔جب تک کمپنی شہر سے کوڑا کرکٹ اٹھانا یقینی نہیں بناتی اس وقت تک اس حوالے سے شہریوں کو گناہگار قرار دینا درست نہیں ہے۔شہریوں کا کہنا تھا کہ اگر ایم ڈی اپنی کمپنی کی کارکردگی بہتر نہیں بنا سکتے تو استعفیٰ دے کر گھر چلے جائیں۔ شہریوں کو برا بھلا کہنے اور اپنی کمپنی کی ناکامی کا ملبہ عوام پر ڈالنے سے گریز کرے۔

Related posts