شریف فیملی کے کیسز نے فیصل آباد کے طلبہ کو لیپ ٹاپ سے محروم کردیا


فیصل آباد (نیوزلائن)کیسوں میں پھنسی شریف فیملی کی عدالتوں میں مصروفیت کی وجہ سے فیصل آباد کے چھے ہزار سے زائد طلباء و طالبات کولیپ ٹاپ فراہمی التواء کا شکار ہے۔طلبہ کی بڑی تعداد کے محکمہ تعلیم کے اعلیٰ حکام کو خطوط اور شکایات کے باوجود گوداموں میں پڑے لیپ ٹاپ کی تقسیم نہیں کی جارہی۔ نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد کے چھے ہزار سے زائد کالج سٹوڈنٹس کو لیپ ٹاپ کیلئے منتخب کیا گیا تھا۔ منتخب طلبہ کے ناموں کا اعلان بھی ہو گیا۔ لسٹیں کالجوں کو بھی مل گئیں۔ 12مئی 2017کا دن طلبہ کو لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کیلئے چنا گیا۔شریف فیملی کے ہونہار سپوت حمزہ شہباز نے اس تقریب کو بطور مہمان خصوصی رونق بخشنی تھی مگر عین وقت پر تقرین منسوخ کردی گئی۔ جس کی وجہ یہ بتائی گئی کہ حمزہ شہباز مصروف ہیں۔ چھے ماہ سے زائد وقت گزر چکا ہے۔ حمزہ شہباز کی مصروفیت ہی ختم ہونے کو نہیں آئی۔ میاں شہباز شریف خود بھی انتہائی مصروف ہیں۔ میاں نواز شریف اور ان کی فیملی کیسز میں الجھی ہوئی ہے۔ شریف فیملی کے علاوہ کسی کو مہمان خصوصی بنانے کی محکمہ ہائیر ایجوکیشن جرأت نہیں کر پا رہا۔اس دوران وزیر ہائیرایجوکیشن خود بھی فیصل آباد آچکے مگر انہیں بھی شریف فیملی کے بغیر لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کی شائد ’’اجازت‘‘ نہیں مل پائی۔جس تقریب کیلئے ایک بار حمزہ شہباز کا نام آگیا شائد اس کیلئے فیصل آباد سے تعلق رکھنے والے وزیر قانون کا نام رکھنا بھی مناسب نہیں سمجھا جا رہا۔طلبہ بڑی تعداد میں درخواستیں اور شکایات ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کو بھجوا چکے ہیں۔مگر سب بے سود ثابت ہوا ہے۔ ہائیرایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے مقامی حکام کا کہنا ہے کہ لیپ ٹاپ کیلئے طلباء اور طالبات کے نام میرٹ پر چنے گئے تھے۔ لسٹیں بنی ہوئی ہیں جبکہ طلبہ کو بھی اس بارے میں آگاہ کیا جا چکا تھا۔حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ حکومت نے لیپ ٹاپ بھی خرید رکھے ہیں۔ان کی تقسیم کا فیصلہ ہائیرایجوکیشن پنجاب نے کرنا ہے۔ ہماری تیاری مکمل ہے۔’’اوپر ‘‘ سے جیسے ہی حکم آئے گا لیپ ٹاپ تقسیم کر دئیے جائیں گے۔

Related posts

Leave a Comment