واسافیصل آبادنے راوی اور چناب کاپانی زہربنا دیا


فیصل آباد(ندیم جاوید)واسا فیصل آباد آلودگی بڑھانے کے مشن پر گامزن ہے۔ فیصل آباد کے دونوں اطراف بہنے والے دریاؤں راوی اور چناب کو واسا مسلسل آلودہ کرنے کا مشن اپنائے اور اس میں انتہائی تیزی کیساتھ اضافہ کرنے کیلئے کوشاں ہے۔ بیس سالوں میں واسا فیصل آباد نے دریائے راوی اور دریائے چناب کے پانی کوزہر آلود کرنے میں بھرپور کردار ادا کیا ہے اور اس مشن کو بھرپور انداز میں جاری رکھے ہوئے ہے مستقبل میں بھی واسا کو اس گھناؤنے مشن سے روکنے میں کوئی قانون ‘ کوئی ادارہ اور کوئی شخصیت حائل ہوتی نظر نہیں آتی۔نیوزلائن کے مطابق واسا کی ذمہ داریوں میں اولین ویسٹ واٹر کی محفوظ انداز میں تلفی شامل ہے۔ صنعتی اداروں‘ تجارتی مراکز اور عام صارفین کو ویسٹ واٹر ‘ پینے کے صاف پانی میں شامل کرنے سے باز رہنے کا’’ سبق‘‘ پڑھاتے رہنے اور اس جرم پر صنعتی اداروں کیخلاف کارروائیاں اور جرمانے کرنے والا ادارہ خود اس جرم میں گردن گردن دھنسا ہوا ہے۔واسا کے اپنے ریکارڈ سے ثابت ہوتا ہے کہ واسا صنعتوں کا کیمکل ویسٹ واٹر اور گھروں کو سیوریج دریائے چناب اور راوی میں پھینک رہا ہے ۔واسا کی دستاویزات میں انکشاف ہوا ہے کہ واسا روزانہ 310ملین گیلن ویسٹ واٹر دریائے راوی اور چناب میں پھینکتا ہے اور بیس سال سے مسلسل پھینک رہا ہے۔ صنعتی اداروں کیخلاف انتہائی معمولی آلودہ پانی بھی صاف پانی میں ملانے پر کارروائی کیلئے چڑھ دوڑنے والا محکمہ موحولیات واسا کے سنگین جرم پر آنکھیں بند کئے ہوئے ہے۔ فیصل آباد کی ضلعی انتظامیہ بھی اس جرم کے ارتکاب بارے مکمل طور پر آگاہ ہے مگر چند گیلن پانی بھی نہر میں پھینک دینے پر فیکٹریوں کو ہفتوں بند رکھنے کی سزا دینے والے ڈپٹی کمشنر بھی واسا کے اس گھناؤنے جرم پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ماہرین کے مطابق واسا کے اتنی بڑی مقدار میں کیمکل ملا پانی پھینکنے سے دریاؤں کا پانی بھی زہریلا ہو چکا ہے اور اسے بغیر ٹریٹمنٹ کے پینے کیلئے استعمال کرنا بیماریوں کے پھیلنے کا سبب بن سکتا ہے۔

Related posts

Leave a Comment