فیصل آباد پارکنگ کمپنی: اڑھائی سال کی آمدن پراسرار طور پر غائب


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد پارکنگ کمپنی کی اڑھائی سال کی آمدنی پراسرار طریقے سے غائب ہوگئی۔ٹی ایم ایز سے زیادہ پارکنگ پوائنٹس ہونے‘ متعدد پرائیویٹ پارکنگ پوائنٹس پر قبضے کے باوجود کمپنی آمدن نہیں دے پائی رہی۔نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد پارکنگ کمپنی شہر میں 167پوائنٹس پر پارکنگ کا نظام چلا رہی ہے اور صرف 40پوائنٹ ظاہر کئے جاتے ہیں اور 127پوائنٹس سے ہونیوالی آمدنی پراسرار طور پر غائب ہو رہی ہے۔ ظاہر کردہ پوائنٹس کی آمدن کا بھی کوئی حساب نہیں ہے۔ قواعد کی رو سے پارکنگ کمپنی نے جس محکمہ کے پارکنگ پوائنٹ پر قبضہ کیا تھا اسے آمدن کا 70فیصد ادا کرنا تھا۔ 27پوائنٹس ٹی ایم ایز کے پارکنگ کمپنی کو دئے گئے تھے مگر اڑھائی سال میں پارکنگ کمپنی نے ٹی ایم ایز یا میونسپل کارپوریشن کو ایک پائی ادا نہیں کی۔ ابتدا میں کہا جاتا رہا کہ بیرون چنیوٹ بازار بننے والے پارکنگ پلازے کو فیصل آباد پارکنگ کمپنی اپنے ذرائع اور آمدن سے تعمیر کروائے گی۔ سابق ڈی سی او پارکنگ پلازے کی تعمیر کے حوالے سے پارکنگ کمپنی اور اس کی ایم ڈی کی تعریفوں کے پل باندھتے نہیں تھکتے تھے۔ مگر پارکنگ پلازے کی تعمیراتی مدت ختم ہو چکی ہے اور ابھی تک پارکنگ پلازے کا 20فیصد کام بھی مکمل نہیں ہوا۔ پارکنگ پلازے کی تعمیر پر لگنے والے 30کروڑ روپے میں سے ایک پائی بھی پارکنگ کمپنی نے فراہم نہیں کی اور نہ ہی ضلعی انتظامیہ کو آمدن میں سے حصہ دیا ہے۔ الٹا پارکنگ کمپنی کو ایک کروڑ روپے دے کر ضلعی انتظامیہ اس کی واپسی کیلئے پریشان ہے۔ذرائع کے مطابق پارکنگ کمپنی کے اکاؤنٹس میں بھی اتنی رقم موجود نہیں ہے جو اس کی خوشحال صورتحال اور اڑھائی سال کی آمدن کے برابر ہو۔ پارکنگ کمپنی کے پاس اتنی بھی رقم نہیں ہے جتنی شہر کے 27پوائنٹس سے ٹی ایم ایز ایک سال میں اکٹھی کر لیتی تھیں۔پارکنگ کمپنی کی آمدن پراسرار طریقے سے غائب ہونے سے ضلعی انتظامیہ ، میئر اور دیگر متعلقہ محکمہ پریشان ہیں جبکہ پارکنگ کمپنی کی ایم ڈی کسی کو بھی اس حوالے سے حساب دینے کو تیار نہیں ہیں۔

ایم ڈی پارکنگ کمپنی کی تعیناتی غیرقانونی اور خلاف قواعد ہوئی

Related posts

Leave a Comment