فیسکو میں ریٹائرمنٹ کی عمر گزار چکے ’’بابوں‘‘کی فوج جمع


فیصل آباد(احمد یٰسین)فیصل آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی میں ریٹائرمنٹ کی عمر گزار چکے ملازمین کی بڑی تعداداپنی سیٹوں سے چمٹی ہوئی ہے اور کوششوں کے باوجود کمپنی ان بااثر ’’بابوں‘‘ کو نکال نہیں پا رہی۔ پچپن سے ساٹھ سال کی عمر کے تین ہزار’’بابے‘‘ تو ابھی گریس مارکس کیساتھ چل ہی رہے ہیں۔عمر کے ساٹھ سال کے ہندسے کو کراس کر جانے والے 1397ملازمین کی کمپنی میں موجودگی نوجوانوں کا راستہ روکنے کی سازش کے سوا کوئی دوسری وجہ سامنے نہیں آئی۔ نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی میں ایک ہزار تین سو ستانوے ایسے ملازمین کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے جو ساٹھ سال سے زائد عمر کے ہوچکے ہیں مگر وہ ہنوز کمپنی میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ یہ انکشاف خود فیسکو کی اپنی دستاویزات میں ہوا ہے جو فیسکو نے ایک وفاقی ادارے کو کمپنی کے اثاثہ جات ‘ آمدن‘ اخراجات کی تفصیلات کے ساتھ بھجوائی ہیں۔ اس رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ فیسکو کے 1397ملازمین ساٹھ سے زائد العمر ہیں جبکہ 55سے 60سال کے درمیان 3047بابے اس کے علاوہ ہیں۔ فیسکو میں 36سے 45سال کی عمر کے 3170ملازمین ہیں جبکہ 21سے 35سال کی عمر کے 3122ملازمین خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق فیسکو میں 20سال سے کم عمر کے صرف 14ملازمین ہیں۔ساٹھے باٹھے ملازمین کسی ایک گریڈ کے نہیں ہیں بلکہ مختلف گریڈز کے ہیں اور فیسکو کے مختلف شعبہ جات میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ ماہرین کے مطابق ساٹھ سال سے زائد عمر کے ملازمین کو ملازمت پر برقرار رکھ کر فیسکو ملکی قوانین اور سپریم کورٹ کے احکامات کی خلاف ورزی کا مرتکب ہو رہا ہے۔ ایسا کرنے والے فیسکو کے چیف ایگزیکٹو کیخلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جانی چاہئے۔

Related posts