موٹرسائیکل فراڈ:احمد سیال نے خود اپنے خلاف قانونی کارروائی کروائی


فیصل آباد(نیوزلائن)موٹرسائیکل فراڈ میں ملوث ایم این ایم کمپنی کے مالک احمد سیال نے سازش اور منصوبہ بندی کے تحت اپنے خلاف قانونی کارروائی کروائی۔ سازش میں ایف آئی اے کے افسران بھی ملوث ہیں اور اس تمام منصوبہ بندی کا مقصد لوگوں کے پیسے ہڑپ کرنا ہے۔نیوزلائن کے مطابق شہریوں کا اربوں روپے ہڑپ کرنے والے موٹرسائیکل فراڈ کمپنی ایم این ایم کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ ایم این ایم کے ماک احمد سیال نے خود ایف آئی اے سے اپنے خلاف کارروائی کروائی۔ایم این ایم کمپنی کے بارے میں سامنے آیا ہے کہ وہ مختلف شہروں میں لوگوں سے 14ارب روپے اکٹھی کر چکی ہے ۔ بڑی تعدادمیں لوگوں کے پیسے واپس کرنے کا وقت تھا کہ احمد سیال نے اپنے ایک ساتھیوں سے ایف آئی اے میں درخواستیں دے کر کارروائی شروع کروا دی۔ اس کیلئے ایف آئی اے کے افسران سے بھی ساز باز کی گئی اور انہیں اعتماد میں لے کر کارروائی شروع کروائی گئی۔ احمد سیال نے پہلے اپنے چند کارندوں کو گرفتار کروایا لیکن معاملہ اس سے نہ سنبھالا گیا اور لوگ پھر بھی پیسوں کی واپسی کا تقاضا کرتے رہے تو خود بھی گرفتاری دیدی۔ لوگوں کے اربوں روپے اس کی طرف واجب الادا ہیں اور احمد سیال آرام سے تفتیش بھگت کر عازم جیل ہو چکا ہے۔ کیس میں چند ماہ کی سزا ہو گی اور پھر سیدھے سبھاؤ گھر واپس آکر تمام پیسہ ہضم کھیل ختم کا ڈراپ سین کیا جائے گا۔ احمد سیال کے بارے میں سامنے آیا ہے کہ اس کہ پوری فیملی اس دھندے میں ملوث ہے۔ اس کی بیوی ‘ اسکا برادر نسبتی‘ اس کے دیگر عزیزو اقارب بھی اس دھندے میں اس کے ساتھ تھے جبکہ سازش میں ایف آئی اے حکام بھی ملوث ہیں ۔ایف آئی اے حکام نمبربازی کرنے کے سوا کچھ نہیں کر رہے۔ احمد سیال کیخلاف کیس میں جھول رکھنے اور کیس کو کمزور سے کمزور رکھنے کا وعدہ وہ کرچکے ہیں اور ایسا ہی کیا جا رہا ہے۔ عینی شاہدین شامل کئے جارہے ہیں اور نہ کیس میں دستاویزی شواہد کو مضبوط شہادت بنایا جا رہا ہے۔ کمزور کیس کی وجہ سے احمد سیال کی ضمانت بھی ہو جائے گی اور سزا بھی کم سے کم ہو گی۔ کیس کو عملی بنانے کی بجائے مفروضوں پر کھڑا کیا جا رہاہے۔ احمد سیال سے ریکوری کرنے اور شہریوں کو رقوم کی واپسی کی طرف بھی ایف آئی اے کی کوئی توجہ نہیں ہے۔شہریوں کیساتھ ایک مرتبہ پھر اربوں روپے کا فراڈ ہوچکا اور تفتیش‘ نعرے‘ دعوے‘ اس کے سوا حکام کچھ بھی نہیں کر رہے۔

Related posts