فیصل آباد میں سٹی ہاؤسنگ کی غیرقانونی منظوری کا انکشاف


فیصل آباد(نیوزلائن)ایف ڈی اے حکام کی غفلت ‘ لاپرواہی اور مبینہ ملی بھگت کی وجہ سے فیصل آباد میں سٹی ہاؤسنگ کی غیرقانونی منظوری کا انکشاف ہوا ہے۔ غیرقانونی منظوری میں فیصل آباد ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے اعلیٰ حکام کے ملوث ہونے کی اطلاعات ہیں۔ معاملہ پکڑنے جانے پر ایف ڈی اے حکا م کو منظوری کے کئی ماہ بعد سٹی ہاؤسنگ کے چار سو سے زائد پلاٹ منسوخ کرنا پڑے۔قانون سے کھلواڑ ثابت ہونے کے باوجود ڈی جی اور ڈائریکٹر ٹاؤن پلاننگ سمیت کسی کیخلاف ایکشن نہیں لیا گیا۔نیوزلائن کے مطابق سٹی ہاؤسنگ فیصل آباد کی منظوری قواعد کو نظر انداز کرکے کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ قواعد کی رو سے سٹی ہاؤسنگ کی منظوری کیلئے مطلوبہ این او سی چیک کئے بغیر ہی ایف ڈی اے حکام نے سٹی ہاؤسنگ انتظامیہ کو منظوری سرٹیفکیٹ تھما دیا۔ ذرائع کے مطابق سٹی ہاؤسنگ انتظامیہ نے مبینہ طور پرایک محکمے کا بوگس این او سی جمع کروایا ۔ اور ایف ڈی اے حکام سے ملی بھگت کرکے ہاؤسنگ کالونی کیلئے منظوری سرٹیفکیٹ حاصل کر لیا۔ ایف ڈی اے قواعد کی رو سے تمام این او سی جمع کروائے بغیر منظوری نہیں ہو سکتی ۔این او سی کی صحت کی چیکنگ کیلئے متعدد افراد کو ذمہ داریاں سونپی گئی ہیں ۔منظوری کے بعد نشاندہی پر انکشاف ہوا کہ سٹی ہاؤسنگ انتظامیہ کے جمع کروائے گئے این او سی میں سے بعض این او سی غلط ہیں۔ انکوائری میں یہ نشاندہی درست ثابت ہوئی اور سٹی ہاؤسنگ مالکان کی جعل سازی ثابت ہوگئی جس پر ہنگامی اقدامات کرتے ہوئے سٹی ہاؤسنگ کے ساڑھے چار سو سے زائد پلاٹوں کی منظوری منسوخ کرنی پڑی۔ پلاٹ تو منسوخ کردئیے گئے مگر بوگس این او سی جمع کروانے والے سکیم مالکان کیخلاف کارروائی ہو سکی نہ بوگس این او سی پر سکیم کی منظوری دینے والے افسران کیخلاف قانون حرکت میں آیا۔ چیکنگ پر این او سی درست قرار دینے والے افسران بھی ابھی تک اپنی سیٹوں پر موجود ہیں۔

Related posts