فیصل آباد میں غیرقانونی تعمیرات‘ ایکسٹینشن کالونیوں کی بھرمار


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد میں بڑے پیمانے پر غیرقانونی تعمیرات کئے جانے اور بغیر منظوری رہائشی کالونیوں کی ایکسٹینشن بنائی جا رہی ہیں۔ ایف ڈی اے حکام تمام صورتحال کا علم ہونے کے باوجود غیرقانونی تعمیرات اور بغیر منظوری بننے والے ایکسٹینشن کے خلاف کارروائی کرنے سے گریزاں ہیں۔ نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد میں بڑے پیمانے پر غیرقانونی تعمیرات کی جارہی ہیں۔ پہلے سے آباد علاقوں کے ارد گرد کی زمینوں پر غیرقانونی تعمیرات کرکے ایف ڈی اے قوانین کا کھلے عام مذاق اڑایا جا تا ہے۔ میونسپل کارپوریشن حکام بھی قانونی تقاضے پورے نہ کرنے والی زمینوں پر نقشے غیرقانونی طور پر منظور کردیتے ہیں جبکہ زمینوں کے انتقال اور یوٹیلٹی سروسز کی فراہمی بھی قانونی تقاضے پورے نہ کرنے والوں کو فراہم کئے جانے کی رپورٹس سامنے آرہی ہیں۔ بڑے پیمانے پر غیرقانونی تعمیرات ہونے کے باوجود ایف ڈی اے کا ٹاؤن پلاننگ کا عملہ کوئی ایکشن نہیں لے پارہا۔ تعمیرات روکنے کیلئے ابتدائی اقدامات اٹھائے جاتے ہیں مگر ’’ڈیل‘‘ ہونے پر ایف ڈی اے حکام آنکھیں بند کرلیتے ہیں اور لینڈ مافیاز کو لوٹ مار کی کھلی اجازت دیدی جاتی ہے۔ متعدد رپورٹس ایسی بھی سامنے آئی ہیں کہ ڈائریکٹر جنرل ایف ڈی اے کے احکامات کے باوجود ٹاؤن پلاننگ عملہ غیرقانونی تعمیرات کیخلاف کارروائی نہیں کرتا اور صرف ’’ڈیل‘‘ کی کوششیں کی جاتی ہیں۔ ’’ڈیل‘‘ ہونے پر کوئی قانونی رہتا ہے اور نہ اس پر عمل درآمدضروری سمجھا جاتا ہے۔ شہر میں زرعی زمینوں پر مکانات ‘ پلازے بن رہے ہیں مگر ایف ڈی اے حکام کے کان پر جون تک نہیں رینگتی۔

Related posts