شہباز شریف حکومت پرائیویٹ سکولوں کا مکمل ڈیٹا لینے میں ناکام


فیصل آباد(احمد یٰسین)مسلم لیگ ن کے صوبائی صدر اور وزارت عظمیٰ کے متوقع امیدوار میاں شہباز شریف کی حکومت پنجاب بھر کے پرائیویٹ سکولوں کا مکمل ڈیٹا لینے میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔اور حکومت کا پرائیویٹ سکول شماری پلان ناکامی سے دوچار ہو گیاہے۔پنجاب حکومت کے احکامات کے باوجود بہت بڑی تعداد میں سکولوں نے سکول شماری کے دوران حکومتی اداروں کو معلومات کی فراہمی نہیں کی۔فیصل آباد کے سکولوں کی بہت بڑی تعداد بھی سکول شماری مہم میں عدم تعاون کی مرتکب پائی گئی ہے۔ نیوزلائن کے مطابق پنجاب حکومت نے صوبہ بھر میں سکول شماری مہم شروع کی تھی۔ مسلم لیگ ن کے پنجاب کے صدر اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے سکول شماری مہم پر خصوصی فوکس کیا اور وزارت تعلیم کے حکام کو سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں کی الگ الگ معلومات حاصل کرکے جمع کرنے اور اس ڈیٹا کی بنیاد پر مستقبل کی پلاننگ کرنے کا ٹاسک دیا تھا۔پنجاب حکومت کی سکول شماری مہم کے دوران ڈیٹا اکٹھا کیا گیا تو صوبے کے 52ہزار 231سکولوں نے تو اپنا ڈیٹا فراہم کر دیا تاہم شہباز شریف حکومت پرائیویٹ سکولوں سے مکمل ڈیٹا لینے میں کامیاب نہیں ہو سکی۔ پنجاب حکومت کے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق صوبے کے 60ہزار 502پرائیویٹ سکولوں سے اس مہم کے دوران ڈیٹا لیا جا سکا ہے اور وہ بھی مکمل نہیں ہے۔اس ڈیٹا میں بھی نجی سکولوں میں بچوں کی تعداد‘ اساتذہ کی تعداد‘ بچوں کی ماہانہ فیس‘ اساتذہ کی کوالیفکیشن‘ اساتذہ کی تنخواہوں کی تفصیلات نہیں ہیں۔ جبکہ بہت بڑی تعداد میں سکولوں نے حکومتی سکول شماری مہم میں اپنا نام بھی شامل نہیں ہونے دیا۔ایجوکیشن ماہرین کے مطابق 40فیصد سے زائد سکول اس سکول شماری مہم میں شامل نہیں ہوئے ۔بڑے اور مہنگے پرائیویٹ سکولوں سے حکومت ڈیٹا حاصل ہی نہیں کرپائی۔ ایسے میں اس سکول شماری مہم کو کامیاب نہیں قرار دیا جا سکتا۔ذرائع کے مطابق بڑے سکولوں نے حکومتی اداروں کیساتھ عدم تعاون کیا اور اپنے سکول بارے معلومات فراہمی سے انکاری رہے۔ حکومتی اہلکار ان سکولوں کے بااثر مالکان کے سامنے بے بس رہے اور ان سے معلومات حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکے۔ بعض سکولوں کے حوالے سے یہ بھی سامنے آیا ہے کہ انہوں نے سکول شماری کیلئے آنیوالے حکومتی اہلکاروں کو سکول میں داخل ہونے کی بھی اجازت نہیں دی۔ صورتحال کا علم ہونے کے باوجود بااثر سکول مالکان کیخلاف حکومت نے کوئی ایکشن نہیں لیا۔انہی عوامل کی بناء پر حکومت کا پرائیویٹ سکول شماری پلان بری طرح ناکام ثابت ہوااور مستقبل کی پلاننگ بھی اسی تناظر میں بہتر نہیں ہو پائے گی۔

Related posts