انڈیپنڈنٹ یونیورسٹی:ڈاکٹر شجاع طاہربوگس ڈگریاں بانٹتے رہے


فیصل آباد(احمد یٰسین)انڈیپنڈنٹ یونیورسٹی (انڈیپنڈنٹ میڈیکل کالج) فیصل آباد اور اس کے چیئرمین بوگس تعلیمی ڈگریاں جاری کرنے میں ملوث پائے گئے ہیں۔ ہائیرایجوکیشن کمیشن‘ ضلعی انتظامیہ اور دیگر متعلقین نے ڈاکٹر شجاع اور دیگر ذمہ داران کیخلاف ابھی تک کوئی ایکشن نہیں لیا۔نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد میں بنائی گئی انڈیپنڈنٹ یونیورسٹی (انڈیپنڈنٹ میڈیکل کالج) کو ہائیرایجوکیشن کمیشن غیرقانونی قرار دے چکا ہے۔ غیرقانونی ادارہ ڈگریاں جاری کرنے کا اختیار بھی نہیں رکھتا جبکہ وہاں تدریسی سلسلہ جاری رکھنا بھی ممنوع ہے۔ غیرقانونی انڈیپنڈنٹ یونیورسٹی میں داخلے کرنا بھی قانون کی رو سے جرم ہے اور اس انسٹی ٹیوشن کی ڈگری بھی غیرقانونی اور جرم ہے۔ انڈیپنڈنٹ یونیورسٹی(انڈیپنڈنٹ میڈیکل کالج)اور دیگر غیرقانونی قرار دئیے گئے اداروں کے حوالے سے ہائیرایجوکیشن کمیشن وارننگ نوٹس بھی جاری کرچکا ہے جس میں واضح طور پر طلبہ کو منع کیا گیا ہے کہ وہ ان اداروں میں داخلہ نہ لیں۔ نوٹس میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ ہائیرایجوکیشن کمیشن ان اداروں کے طلبہ کی ڈگریوں کی تصدیق نہیں کرے گا۔ ایچ ای سی کے وارننگ نوٹس سے واضح ہے کہ انڈیپنڈنٹ یونیورسٹی(انڈیپنڈنٹ میڈیکل کالج) فیصل آباد کی ڈگریاں بوگس ہیں اور ان میں تدریس کا عمل جاری رکھ کر اسکی انتظامیہ جرم کا ارتکاب کررہی ہے۔ قانونی ماہرین کے مطابق غیرقانونی طور پر بوگس ڈگریاں جاری کرنے پر انڈیپنڈنٹ یونیورسٹی(انڈیپنڈنٹ میڈیکل کالج) فیصل آباد کے چیئرمین ڈاکٹر شجاع طاہر و دیگر انتظامیہ کیخلاف کارروائی ہو سکتی ہے۔ ماہرین کے مطابق غیرقانونی لسٹ سے نکلنے تک اس ادارے کو بند کیا جانا چاہئے بصورت دیگر کوئی بڑا مسئلہ بھی پیدا ہو سکتا ہے۔

Related posts