ڈی پی ایس : سکول پرائیویٹ‘ پروٹوکول وی وی آئی پی


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد میں ڈویژنل پبلک سکول کی رجسٹریشن پرائیویٹ ہونے اور سکول انتظامیہ کو غیرقانونی طور پر سرکاری اور و ی آئی پی پروٹوکول دیا جارہاہے۔نیوزلائن کے مطابق ڈویژنل پبلک سکول فیصل آباد کو ضلعی انتظامیہ اور کمشنر آفس پرائیویٹ ڈکلیئر کر چکے ہیں۔ محکمہ تعلیم میں اس کی رجسٹریشن بھی ایک پرائیویٹ ادارے کے طور پر کروائی گئی ہے۔ سکول کیلئے زمین سرکار کی استعمال کی جارہی ہے جس کا اس پرائیویٹ سکول نے ایک پائی بھی ادانہیں کیا۔ طلبہ سے ہزاروں روپے فیس کے علاوہ بھاری ڈونیشن لینے والا سکول بعض سرکاری افسران کے جانبدارانہ روئیے کی وجہ سے وی آئی پی پروٹوکول بھی حاصل کررہا ہے اور سرکاری نہ ہونے کے باوجود سرکاری سہولیات سے بھی استفادہ کررہا ہے۔ سکول کی اراضی سرکاری ہے۔ بیس کروڑ روپے سے زائد سالانہ فیس بچوں سے لینے کے باوجود سکول انتظامیہ فنڈز کی کمی کا رونا روتی رہتی ہے۔پرائیویٹ ادارہ ہونے کے باوجود سرکاری زمینوں پر سکول کی مزید شاخیں تعمیر کی جارہی ہیں اور ڈپٹی کمشنر‘ کمشنر سمیت کوئی افسر اس پر سوال نہیں اٹھا پا رہا۔ ایک پرائیویٹ ادارہ ہونے کے باوجود اس کے ملازمین کو کمشنر آفس میں دفاتر دئیے گئے ہیں اور انہیں بھاری فنڈز خرچ کرنے کی کھلی چھوٹ دی گئی ہے۔سکول کا تمام سٹاف پرائیویٹ ڈکلیئر کیا جارہا ہے مگر سرکاری اراضی مفت الاٹ کی جارہی ہے۔سکول و کالج رجسٹریشن کے قواعد یہاں آکر خاموش کروا دئیے جاتے ہیں۔ سکول انتظامیہ محکمہ تعلیم کے حکام کو مکمل طور پر نظر انداز کرتی ہے۔ سی ای او ایجوکیشن سمیت کسی آفیسر کو سکول میں داخل ہونے کی بھی اجازت نہیں دی جاتی۔ ایجوکیشن افسران اس کی انسپکشن کرسکتے ہیں نہ یہاں کے معاملات کی نگرانی کرنے کے مجاز قرار پاتے ہیں۔ پرائیویٹ سکول ہونے کے باوجود ڈی پی ایس محکمہ تعلیم کے افسران کیلئے نو گو ایریا ہے اور بغیر اجازت انہیں گیٹ سے اندر داخل نہیں ہونے دیا جاتا۔ایک پرائیویٹ تعلیمی ادارے کیلئے ایسا وی آئی پی پروٹوکول دیگر پرائیویٹ سکولوں و کالجوں کا استحقاق مجروح کرنے اور استحصال کا موجب بن رہا ہے۔

Related posts