رانا ثناء اللہ الیکشن کیلئے میاں فاروق کو منانے پر مجبور ہو گئے


فیصل آباد(احمد یٰسین) چیئرمین ضلع کونسل کے الیکشن میں قاسم فاروق کی مخالفت رانا ثناء اللہ کو مہنگی پڑ گئی۔صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ خاں ہاتھوں سے دی ہوئی گانٹھیں دانتوں سے کھولنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔ این اے 106سے قومی اسمبلی کا الیکشن لڑنے کیلئے رانا ثناء اللہ کو رکن قومی اسمبلی میاں فاروق اور ن لیگ کے ضلعی صدر قاسم فاروق کو منانا پڑ گیا۔نیوزلائن کے مطابق صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ خاں نے مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما و رکن قومی اسمبلی میاں فاروق اور ان کے بیٹے قاسم فاروق کیساتھ ڈیڑھ سال بعد صلح کر لی ہے ۔اس صلح کیلئے رانا ثناء اللہ کو کئی جتن کرنے پڑے اور کئی ایک سفارشی درمیان میں ڈال کر وہ میاں فاروق کو صلح کیلئے راضی کرسکے۔ ان کے مابین اختلافات اس وقت شروع ہوئے جب بلدیاتی الیکشن میں رانا ثناء اللہ نے اپنے ہی کیمپ کے قاسم فاروق کی اندر کھاتے میاں شہباز شریف کے سامنے مخالفت کی اور چوہدری شیرعلی گروپ کے زاہد نذیر کو چیئرمین ضلع کونسل بنوانے کی حمائت کی۔آئندہ عام انتخابات میں رانا ثناء اللہ صوبائی اسمبلی کیساتھ این اے 106سے قومی اسمبلی کا الیکشن بھی لڑنا چاہتے ہیں۔ لیکن نئی حلقہ بندیوں میں میاں فاروق کا آبائی گاؤں میانی اور اس کے ارد گرد کے کئی دیہات این اے 106میں شامل ہیں۔این اے 106میں کئی ماہ کی غیر اعلانیہ انتخابی مہم کے بعد بھی رانا ثناء اللہ خاں کو علاقے میں خاطر خواہ پذیرائی نہ ملی تو رانا ثناء اللہ کو مجبور ہو کر میاں فاروق کی طرف ہاتھ بڑھانا پڑا۔ ان علاقوں میں اپنے لئے جگہ بنانے کیلئے رانا ثناء اللہ کو میاں فاروق کے گہرے اثرورسوخ کو استعمال کرنے پر مجبور ہونا پڑا اور وہ اپنا الیکشن بچانے کیلئے صلح پر مجبور ہوگئے۔ ن لیگی حلقوں کے مطابق صلح کیلئے رانا ثناء اللہ نے درجنوں سفارشیں استعمال کی ہیں۔ پارٹی قیادت کو بھی بیچ میں ڈالا جبکہ مقامی اہم شخصیات کو بھی ضامن بنا کر صلح کی ہے۔ کئی ماہ کی لابنگ کے بعد رانا ثناء اللہ کو میاں فاروق اور قاسم فاروق کیساتھ صلح میں کامیابی ہوئی۔ صلح کیلئے رانا ثناء اللہ کو آئندہ عام انتخابات اورمستقبل میں ہونیوالے بلدیاتی الیکشن میں میاں فاروق‘ قاسم فاروق اور ان کے ساتھیوں کی کسی بھی طرح سے مخالفت نہ کرنے کی بھی یقین دہانی کروانی پڑی۔جس کیلئے ن لیگ کے ہی کئی ایک اہم شخصیات ضامن بنی ہیں۔کئی ماہ سے جاری رانا ثناء اللہ کی صلح مہم کا ڈراپ سین لاہور میں دونوں فریقین کی ملاقات میں ہوا ۔ رانا ثناء اللہ کی فرمائش پر میاں فاروق اور قاسم فاروق نے این اے 106میں رانا ثناء اللہ کی حمائت کرنی ہر حامی بھر لی جبکہ میاں فاروق نے اپنے آبائی گاؤں میانی ن لیگ کا جلسہ کروانے کی بھی حامی بھر لی ۔

Related posts