شکست کا خوف:نواز ملک صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑنے سے گریزاں


فیصل آباد(احمد یٰسین)اپنا سابقہ حلقہ تبدیل ہونے پر مسلم لیگ ن کے رہنما اور میئر فیصل آباد کے بھائی ‘ رکن پنجاب اسمبلی نواز ملک صوبائی اسمبلی کے الیکشن سے بھاگنے لگے۔اور ایک دوسرے حلقے میں جا کر قومی اسمبلی کا الیکشن لڑنے کی کوششیں کررہے ہیں۔ پارٹی کی طرف سے اپنے ہی حلقے سے ایم پی اے کا الیکشن لڑنے کی ہدائت کو مسلسل نظر انداز کررہے ہیں ۔ نیوزلائن کے مطابق مسلم لیگ ن فیصل آبادکے رکن پنجاب اسمبلی محمد نواز ملک آمدہ الیکشن میں صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑنے سے گریزاں ہیں۔ نواز ملک کے قریبی حلقوں کا کہنا ہے کہ ان کا حلقہ پی پی 71یکسر طور پر تبدیل ہو چکا ہے۔نئی حلقہ بندیوں میں سابقہ پی پی 71کے علاقے پی پی 110‘ پی پی 111‘ پی پی 112میں بانٹے گئے ہیں۔ کسی ایک بھی حلقے میں پی پی 71کا پچاس فیصد علاقہ بھی نہیں ہے۔ جبکہ متعدد دیگر علاقوں کو بھی انہی تینوں حلقوں میں شامل کیا گیا ہے جس کی وجہ سے حلقوں کی پوزیشن یکسر تبدیل ہو گئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق انہی وجوہات کی بناء پر نواز ملک پی پی 110‘ پی پی 111اور پی پی 112سمیت کسی بھی حلقے سے صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑنے سے ڈر رہے ہیں۔ نجی محفلوں میں نواز ملک ان تینوں حلقوں میں سے کسی بھی حلقے میں الیکشن لڑنے کو واضح شکست قرار دیتے رہتے ہیں۔نواز ملک کے قریبی حلقوں کا کہنا ہے کہ نواز ملک صوبائی اسمبلی کا الیکشن کسی بھی حلقے سے نہیں لڑنا چاہتے وہ ایسے حلقے سے قومی اسمبلی کا الیکشن لڑنا چاہتے ہیں جو ان کے سابقہ حلقہ پی پی 71سے ہٹ کر ہو۔ نواز ملک اپنے رہائشی علاقے کی یونین کونسل سے بلدیاتی الیکشن بھی ہار چکے ہیں۔ بلدیاتی الیکشن میں ان کے رہائشی علاقے کی یونین کونسل سے نواز ملک نے اپنے بھائی ریاض ملک کو یو سی چیئرمین کا الیکشن لڑوایا تھا مگر چوہدری شیر علی گروپ کے امیدوار نے انہیں بری طرح شکست دی تھی۔

Related posts