ڈی پی ایس میں35کروڑ سے زائد کی کرپشن کا انکشاف


فیصل آباد(عاطف چوہدری)پنجاب حکومت کے سرکاری کنٹرول میں چلنے والے پرائیویٹ سکول ’’ڈویژنل پبلک سکول فیصل آباد‘‘ میں 35کروڑ روپے سے زائد کی لوٹ مار سامنے آئی ہے۔ میاں شہباز شریف کے دس سالہ دور اقتدار میں ایک اہم ن لیگی شخصیت کے تعینات کردہ پرنسپل شاہد محمود‘ رانا ثناء اللہ کے انتہائی چہیتے ڈائریکٹر سکول محمد اشرف ‘ رانا ثناء اللہ کے دست راست سابق ن لیگی چیئرمین مارکیٹ کمیٹی علی اصغر بھولا گجر کے قریبی عزیز سکول کے ایڈمن آفیسر ذیشان گجر‘ اکاؤنٹ آفیسرمحمد سمیر اور متعدددیگر انتظامی افسران اس کرپشن‘ لوٹ مار ‘ مالی ضابطگیوں میں ملوث پائے گئے ہیں۔نیوزلائن کے مطابق ڈی پی ایس فیصل آباد کے فنڈز میں بڑے پیمانے پر ہیراپھیری ‘ بے ضابطگیاں‘ کرپشن سامنے آئی ہے۔ ڈی پی ایس کے فنڈز میں گزشتہ دس سال کے دوران بڑے پیمانے پر لوٹ مار کی جاتی رہی۔ آڈٹ رپورٹس میں دس سال کے دوران 35کروڑ روپے سے زائد کی کرپشن سامنے آچکی ہے۔فنڈزمیں ہیراپھیری‘ بے ضابطگیوں‘ کرپشن ‘ لوٹ مار کے حوالے سے سرفہرست نام ڈی پی ایس فیصل آباد کے پرنسپل شاہد محمود کا آرہا ہے۔ جبکہ ان کے پیش رو بھی اس معاملے میں ملوث پائے گئے ہیں۔ شاہد محمود کے علاوہ ڈائریکٹر سکول محمد اشرف ‘ ڈائریکٹر سپورٹس میاں زبیر‘ سکول کا پی ڈی ‘اکاؤنٹ آفیسر محمد سمیر‘ ایڈمن اافیسر ذیشان گجر ‘ سکول ہیڈماسٹر اور متعدد دیگر انتظامی افسران اور بعض اساتذہ کے نام بھی اس معاملے میں ملوث پائے جارہے ہیں۔ ڈی پی ایس کے پرنسپل شاہد محمود کو مسلم لیگ ن کے ایک اہم رہنما کی حمائت حاصل ہونے کی وجہ سے معاملے میں آڈٹ اعتراضات اور کرپشن کی شکایات کے باوجود حکام اس کیخلاف ایکشن لینے کو تیار نہیں ہوئے۔ سابق کمشنر مومن آغا نے اتنے بڑے پیمانے پر گھپلے سامنے آنے پر کارروائی شروع کروائی تھی مگر رانا ثناء اللہ اور بعض دیگر ن لیگی شخصیات کی سفارش پر گھپلوں کی انکوائری ٹھپ کردی گئی۔بچوں کی فیسوں‘ سکول فنڈ‘بلڈنگ فنڈ‘اور دیگر مدات میں بچوں کے والدین سے لئے گئے پیسوں سے اتنی بڑی کرپشن کے باوجود ن لیگی اپنے چہیتوں کو بچاتے رہے ۔ لوٹ مار کرنیوالوں کو مزید دونوں ہاتھوں سے پیسے سمیٹنے کی کھلی اجازت دئیے رکھی۔

Related posts