اختیارات کی جنگ: اے سی سٹی نے اے سی صدر کی بجلی بندکروادی


فیصل آباد(ندیم جاوید)اے سی سٹی فیصل آباد نے اختیارات کا رعب جمانے کیلئے اے سی صدر فیصل آباد کے آفس کی بجلی منقطع کروا دی ۔ اے سی صدر کا آفس اندھیرے میں ڈوب گیا اور تمام دفتری امور ٹھپ ہوگئے۔ اے سی صدر آفس کے عملے کو سارا دن شدید گرمی اور حبس میں گزارنا پڑا۔ جبکہ اے سی سٹی ڈاکٹر انعم سارا دن ائیرکنڈیشنڈ سے ٹھنڈے کئے آفس میں بیٹھی گرمی سے بلبلاتے اے سی صدر آفس کے ملازمین کا تماشا دیکھتی رہی۔نیوزلائن کے مطابق عام انتخابات کے دوران ہونیوالی ٹرانسفرز میں تعینات ہونیوالی اے سی سٹی فیصل آباد ڈاکٹر انعم نے پہلے دن سے ہی اے سٹی صدر فیصل آباد کیساتھ اختیارات کی جنگ شروع کئے رکھی۔ اختیارات کی جنگ آخری حدوں کو چھوتے ہوئے اے سی سٹی ڈاکٹر انعم نے اپنے آفس سے ملحقہ اے سی صدر کے دفاتر کی بجلی منقطع کروا دی ۔ اور بجلی بحال کروانے کی اے سی صدر آفس کے عملے کی کوشش بھی حکم جاری کرکے ناکام بنا دی۔ اے سی صدر آفس کا عملہ تمام دن شدید گرمی اور حبس میں بیٹھا رہاجبکہ اے سی سٹی تمام دن اپنے ٹھنڈے آفس میں بیٹھی گرمی سے بلبلاتے ملازمین کا تماشا دیکھتی رہی۔ ذرائع کے مطابق اے سی سٹی اور اے سی صدر کے دفاتر سابقہ جناح ٹاؤن کے آفس میں قائم ہیں۔ جناح ٹاؤن تحصیل صدر کا بنیادی ٹاؤن قرار دیا جاتا تھا جبکہ لائلپور ٹاؤن تحصیل سٹی کا بنیادی ٹاؤن قرار پایا تھا۔ شہباز شریف کے نئے بلدیاتی نظام کے بعدجناح ٹاؤن آفس کے ایک حصے میں سے سی صدر کا آفس قائم کردیا گیا جبکہ دوسرے حصے پر اے سی سٹی قبضہ جما لیا۔بتایا جاتا ہے کہ تحصیل سٹی کے تحصیلدار سمیت متعدد دفاتر کا بجلی کا بل اے سی صدر کے اکاؤنٹ سے جمع کروایا جاتا ہے او ر یہ گزشتہ 32برس سے جمع ہو رہا ہے ۔ ا ے سی صدر کے موجودہ آفس کا بل گزشتہ ڈیڑھ سال سے اے سی سٹی کے اکاؤنٹ سے جمع کروایا جا رہا ہے۔ اس حوالے سے رابطہ کرنے پر اے سی سٹی ڈاکٹر انعم کا کہنا تھا کہ اے سی سٹی آفس کے میٹر سے اے سی صدر آفس کے لوگ بجلی چوری کررہے تھے۔ میں نے بجلی چوری روکی ہے جو کہ کسی صورت غلط کام نہیں ہے۔ اے سی صدر آفس فیسکو سے اپنا بجلی میٹر نصب کروائے اور جیسے چاہے بجلی استعمال کرے اس کا بل بھی خود دے۔