چمک کا کمال‘ کروڑوں کے ٹیکس چوروں کو معمولی ادائیگی سے کلین چٹ مل گئی


فیصل آباد(ندیم جاوید سے )ایف بی آر کے ریجنل ٹیکس آفس فیصل آباد کے حکام نے ایک ارب روپے سے زائد کے ٹیکس چور سرمایہ داروں کو چند کروڑ کی ریکوری کرکے کلین چٹ دیدی۔ ریکوری سے دو گنا زائد نذرانے وصول کرکے بھی آرٹی اوافسران پاک صاف ہی رہے۔ افسران کے دھندے کا علم ہونے کے باوجود چیف کمشنر فیصل آباد اور ایف بی آر کے اعلیٰ افسران نے مجرمانہ خاموشی اختیار کی ہوئی ہے۔ تفصیل کے مطابق ریجنل ٹیکس آفس فیصل آباد نے گزشتہ سالوں کے بارہ سو سے زائد آڈٹ کیس پکڑے تھے جن میں سرمایہ داروں نے اپنی آمدن سے انتہائی کم ٹیکس ادائیگی کی تھی۔ان کیسز میں ایک ارب آٹھ کروڑ روپے کی کم ٹیکس ادائیگی سامنے آئی تھی۔آڈٹ کیسز پر سرمایہ داروں کو نوٹس دے کر طلب کیا گیا اور انہیں کم ادا کردہ ایک ارب آٹھ کروڑ سے زائد رقم کا ٹیکس جمع کروانے کا حکم دیا گیا ۔ مگر بعد ازاں یہ معاملہ انتہائی پراسرار انداز میں ٹھپ کردیا گیا۔ذرائع کے مطابق آڈٹ کیسز میں ایک ارب آٹھ کروڑ کی بجائے ان سیٹھوں سے 6کروڑ کی آن ریکارڈ جبکہ 19کروڑ روپے کی انڈر ہینڈ وصولی کی گئی ۔19کروڑ روپے کے نذرانوں کی وصولہ کرکے ایک ارب آٹھ کروڑ کی ریکوری معاملے کو محض 6کروڑ کی وصولی سے ٹھپ کردیا گیا۔ ذرائع کے مطابق اس معاملے میں آر ٹی او فیصل آباد کے انتہائی اہم افراد کے ملوث ہونے کی رپورٹس ہیں جبکہ تگڑی’’ سفارش‘‘ایف بی آر ہیڈکوارٹر تک بھی گئی ہے۔ سات برس سے قومی خزانے کو ایک ارب سے زائد کا نقصان پہنچانے والوں کا معاملہ آر ٹی او کی فائلوں میں غائب ہے ۔ نیچے سے اوپر تک ایف بی آر افسران اس صورتحال سے آگاہ ہونے کے باوجود کوئی اس ٹیکس چوری پر ایکشن لینے کو تیار نہیں ہے۔

Related posts

Leave a Comment