ناقص حکمت عملی اوربد انتظامی:ایف ڈی اےکو شدید مالی بحران کا سامنا


فیصل آباد(ندیم جاوید)ناقص حکمت عملی اور بدانتظامی کی وجہ سے فیصل آباد ترقیاتی ادارہ شدید ترین مالی بحران کا شکار ہو گیا ہے۔ فنڈز نہ ہونے کی وجہ سے ایف ڈی اے نئے ترقیاتی منصوبے بھی شروع نہیں کر پا رہا جبکہ ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی بھی ممکن نہیں رہی۔ نیوزلائن کے مطابق فیصل آباد ترقیاتی ادارہ کو اپنی تاریخ کے شدید ترین مالی بحران کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ادارہ نے اخراجات میں بلاوجہ غیر معمولی اضافہ کر رکھا ہے جس کا خمیازہ بھگتنا پڑ رہا ہے۔کالونیوں کو ڈھیل دے رکھی ہے پرائیویٹ ہاؤسنگ سکیمیں ایٖ ڈی اے کو درخور اعتنا نہیں سمجھتیں اور فیسوں کی ادائیگی و منظوری کے چکر میں ہی نہیں پڑتیں۔فیصل آباد کی 90فیصد پرائیویٹ کالونیوں کی طرف ای ڈی اے کے واجبات واجب الادا ہیں مگر ایف ڈی اے وصولی نہیں کر سکا۔ اخراجات میں غیرمعمولی اضافہ بھی ایف ڈی اے کو مالی معاملات درست بنانے میں رکاوٹ ہیں۔اندرونی ذرائع کے مطابق ایف ڈی اے کے موجودہ ڈی جی اے یاور حسین کے آنے کے بعد سے مالی معاملات میں بتدریج خرابی ہی آئی ہے۔ ڈی جی کی ناقص حکمت عملی کی وجہ سے کرپشن عام ہوئی ہے۔ ڈی جی آفس نیا بنانے اور اس کی تزئین و آرائش پر لاکھوں روپے اڑانے کے سوا ڈی جی کوئی خاطر خواہ کارنامہ سرانجام نہیں دے سکے۔ڈی جی کی ناقص حکمت عملی کی وجہ سے ادارہ میں کرپشن عام ہوئی ہے اور ٹیکسوں کی وصولی اور ادارے کی آمدن میں نسبتاً کمی آئی ہے۔ کم آمدن کی وجہ سے اخراجات پورے کرنے کیلئے ایف ڈی اے اپنی اراضی فروخت کرکے تنخواہوں کی ادائیگیاں کرنے پر مجبور ہے۔ اس کیلئے ایف ڈی اے بار بار اپنی جائیدادوں کی فروخت کے اعلانات بھی کر رہا ہے مگر اس میں بھی اسے کامیابی نہیں مل رہی۔

Related posts

Leave a Comment