فیصل آباد پارکنگ کمپنی میں50کروڑ سے زائد کی کرپشن کا انکشاف


فیصل آباد(نیوزلائن)فیصل آباد پارکنگ کمپنی میں اڑھائی سال کے دوران 50کروڑ روپے سے زائد کی کرپشن اور بے قاعدگیوں کا انکشاف ہوا ہے۔نفع بخش اداروں سمیت شہر بھر کا پارکنگ چارج لینے کے باوجود کمپنی نے ’’پارکنگ پلازہ‘‘ کیلئے ایک پائی خرچ نہیں کی۔اور نہ ہی ضلعی حکومت کو ایک پائی کا منافع ادا کیا ہے الٹا نفع بخش پارکنگ پوائنٹس کو’’ گھاٹے کا سودا‘‘ بنا ڈالا۔نیوزلائن کے مطابق مارچ 2015میں بنائی گئی فیصل آباد پارکنگ کمپنی نے سابقہ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کے ایک اعلیٰ افسر کی آشیر باد سے ہسپتالوں‘ پارکنگ سائٹس‘ بنکوں‘ گلیوں ‘ سڑکوں‘ بازاروں پرغیرقانونی قبضے جما کر پارکنگ سٹینڈ بنا ڈالے۔ پارکنگ کمپنی نے بعض سڑکوں اور فٹ پاتھ کو غیرقانونی طور پر کمرشل استعمال کیلئے ٹھیکے پر دے رکھا ہے۔ پارکنگ کمپنی کے دھندے سے سابقہ ٹی ایم ایز واقف تھیں اور نہ موجودہ میونسپل کارپوریشن کو اس تمام صورتحال بارے کوئی رپورٹ دی جا رہی ہے۔اڑھائی سالوں میں پارکنگ کمپنی میں 50کروڑ روپے سے زائد کی خورد برد اور مالی بے ضابطگیاں سامنے آئی ہیں۔ اس دوران پارکنگ کمپنی معاہدے کے مطابق سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کو منافع میں سے 75فیصد دیا اور نہ ٹی ایم ایز اور میونسپل کارپوریشن کو ان کی اراضی استعمال کرنے کا کرایہ ادا کیا جارہا ہے۔ پارکنگ پلازے پر بھی FPCنے ہی خرچ کرنا تھا مگر پارکنگ کمپنی کی ایم ڈی اس ذمہ داری سے بھی بھاگ گئیں اور ابھی تک ضلعی حکومت کے 25کروڑ کے علاوہ پارکنگ پلازے پر ایک پائی بھی نہیں لگ پائی۔اس حوالے سے کمپنی کا جاننے کیلئے پارکنگ کمپنی کی ایم ڈی ام لیلیٰ نقوی سے رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ وہ کسی کو جوابدہ نہیں ہیں۔ کوئی محکمہ یا شہری کسی قانون کے تحت بھی ان سے جواب طلبی نہیں کرسکتا۔ وہ خودمختار ہیں اور کسی کو پارکنگ کمپنی کے فنڈز‘ اخراجات اور معاملات بارے جواب نہیں دیں گی۔

Related posts

Leave a Comment