فیکٹری مالکان کا ”شاہانہ“ احتجاج: عوامی رنگ بھرنے کیلئے مزدور لیڈر بھی طلب

فیصل آباد (احمد یٰسین) سرمایہ داروں سے ٹیکس وصولی رکوانے کیلئے محنت کشوں کے حقوق کے علمبردار لیبر لیڈر بھی فیکٹری مالکان کے ہم رکاب ہوگئے۔سائزنگ فیکٹریوں‘ پاور لومز اور دیگر کارخانہ داروں کیخلاف سارا سال سڑکوں پر رہنے والے لیبر لیڈر وں نے سرمایہ داروں کیخلاف حکومت کے متحرک ہوتے ہی سرمایہ داروں کی حمائت میں احتجاج شروع کردیا ہے۔ نیوز لائن کے مطابق فیکٹری مالکان کی ٹیکس چوریاں روکنے اور ٹیکس چوروں کیخلاف قانونی کارروائی شروع ہوتے ہی سائزنگ اور پاورلومز فیکٹریوں کے ”کروڑپتی“مالکان نے احتجاج شروع کردیا ہے۔ ”شاہانہ احتجاج“ کیلئے اپنی لاکھوں روپے مالیت کی گاڑیوں پر شاہانہ انداز میں ایف بی آر آفس کے سامنے احتجاج کیلئے پہنچے۔ کروڑ پتیوں کے شاہانہ احتجاج میں عوامی رنگ بھرنے کیلئے فیکٹری مالکان نے محنت کشوں اور لیبر لیڈروں کو بھی مظاہروں میں طلب کرلیا۔ سارا سال فیکٹری مالکان کیخلاف سڑکوں پر احتجاج کرنے اور ان کی ٹیکس چوریوں اور غیرقانونی اقدامات کیخلاف کارروائیاں روکنے کے مطالبے کرنے والے لیبر لیڈروں نے بھی فیکٹری مالکان کو ریسکیو کرنا ضروری سمجھا اور حکومتی ایکشن رکوانے کا مطالبہ لے کر فیکٹری مالکان کے ہمراہ ایف بی آر کے ریجنل آفس کے سامنے پہنچ گئے۔ ایف بی آر کے ریجنل آفس کی طرف آنیوالی فیکٹری مالکان کی ریلی کی قیادت وحید خالق رامے اور شکیل انصاری نے کی۔بابا لطیف‘ اسلم معراج اور دیگر مزدورلیڈربھی فیکٹری مالکان کی مدد کیلئے اپنے ساتھیوں سمیت ریلی میں شریک ہوئے اور فیکٹری مالکان کیخلاف مزدور لیڈروں کے مطالبے پر ہی ہونیوالی کارروائیاں رکوانے کیلئے مالکان کی آواز میں آواز ملا کر بولتے رہے۔اور ان کے ساتھ مل کر کئی گھنٹے تک ایف بی آر آفس کے سامنے دھرنا دئیے بیٹھے رہے۔

Related posts