صحت کی جدید سہولیات ۔۔۔عوام کی دہلیز پر


وزیراعلیٰ محمدشہبازشریف کی قیادت میں حکومت پنجاب مختلف سماجی شعبوں کی بنیادیں مستحکم بنانے پر خصوصی توجہ دے رہی ہے تاکہ عوامی فلاح وبہبود کے لئے ان شعبوں کی کارکردگی کے معیار میں مزید اضافہ کرکے انہیں مستقبل کے چیلنجز کامقابلہ کرنے کے قابل بنایا جاسکے۔ان اصلاحاتی اقدامات کے تحت متعلقہ محکموں کو دیرپا بنیادوں پر اس قابل بنایا جارہا ہے کہ آئندہ نسلیں بھی ترقی کے ثمرات سے مستفید ہوسکیں۔اس ضمن میں عوامی بہبود اور علاقائی ترقی کے لئے مکمل کئے گئے بڑے بڑے منصوبوں میں مزید وسعت لائی گئی ہے اور مزید میگاپراجیکٹس پر بھی کام جاری ہے ۔دیگر شعبوں کے ساتھ ساتھ صحت بھی حکومت پنجاب کی اولین ترجیحات میں شامل ہے کیونکہ صوبہ بھر میں مریضوں کو علاج معالجہ کی جدید اورمعیاری سہولتیں ان کے گھروں کے قریب فراہم کرنا حکومت پنجاب کا مشن ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف نے شعبہ صحت کی ترقی اور استحکام کے لئے ہمہ جہت نوعیت کے بے شماراقدامات کئے ہیں اور وہ ان پر بھرپورانداز میں عملدرآمد کے لئے ہمہ تن مصروف عمل بھی رہتے ہیں جس کی بدولت اس شعبہ میں اچھے نتائج حاصل ہورہے ہیں۔اس شعبہ کی ترقی اور استحکام پر ہرممکن وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں۔اس سلسلے میں نئے ہسپتالوں کے قیام کے علاوہ موجودہ ہسپتالوں کی اپ گریڈیشن اورگردے،جگر،کینسر ودیگر مخصوص بیماریوں کے سپیشلائزڈ ہسپتالوں کی ترویج پر بھی خصوصی توجہ مرکوز ہے ۔اس سلسلے میں پاکستان کڈنی اینڈ لیورٹرانسپلانٹ انسٹیٹوٹ کاقیام اہم کڑی ہے جس کے پہلے مرحلے میں تیزرفتاری سے کام جاری ہے 360بستروں پر مشتمل مکمل ہسپتال آئندہ سال کے آغاز میں پایہ تکمیل کوپہنچے گا اور اس میں گردوں وجگر کے امراض میں مبتلا غریب مریضوں کا علاج معالجہ مکمل طور پر مفت ہوگا۔مریضوں کے علاج اورآپریشن پر آنے والے اخراجات پنجاب حکومت برداشت کرے گا۔اس ہسپتال میں عالمی معیار کی سہولیات فراہم ہونگی اور پہلے مرحلے میں اس ہسپتال میں آئی سی یو،سی سی یو،ڈائیلاسزسنٹر اور ایمرجنسی فنکشنل ہوگی۔پاکستان کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹیٹیوٹ اپنی نوعیت کا بڑا ہسپتال ہوگا جہاں سے پورے پاکستان کے مریض علاج کرائیں گے۔خطیر فنڈز سے صوبہ کے ڈسٹرکٹ وتحصیل ہسپتالوں کو اپ گریڈ کیا گیا ہے جہاں جدید طبی مشینری کی فراہمی کے علاوہ اضافی ڈاکٹرز وپیرامیڈیکل سٹاف کی تعیناتی کے علاوہ وزیراعلیٰ ہیلتھ روڈ میپ پروگرام کے تحت ہسپتالوں کی کارکردگی پر کڑی نظر رکھی جارہی ہے ۔سرکاری ہسپتالوں میں اربوں روپے کی لاگت سے مریضوں کیلئے فری ادویات کی فراہمی کویقینی بنایا گیا ہے ۔تحصیل ہیڈ کوارٹرز ہسپتالوں میں ڈائیلاسز یونٹ قائم کرکے گردوں کے مریضوں کو ان کی دہلیزپر علاج معالجہ کی جدید اورتیز رفتار طبی سہولیات فراہم کی گئی ہیں اور اس سہولت سے روزانہ بڑی تعداد میں مریض فائدہ اٹھا کر صحت یاب ہورہے ہیں۔میڈیکل ایجوکیشن کے فروغ کے لئے ملتان،راولپنڈی اور فیصل آباد میں میڈیکل یونیورسٹیز کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جن کی بدولت طب کی تعلیم و تحقیق کی سہولتوں میں وسعت پیدا ہوگی۔پنجاب میں بنیادی مراکز صحت اور رورل ہیلتھ سنٹرز کے انتظام وانصرام کو بہتر بنانے کے لئے پنجاب ہیلتھ فیسلٹیز مینجمنٹ کمپنی کاقیام عمل میں آچکا ہے ۔اس اقدام سے بنیادی اور نچلی سطح پر صحت کی سہولتوں میں وسعت اور اس شعبہ میں حکومتی اقدامات پر بھرپور عملدرآمد کی راہیں ہموار ہونگی۔دیگر شہروں کی طرح صوبہ کے دوسرے بڑے شہر فیصل آباد میں بھی صحت کے شعبہ میں وسیع اقدامات کئے گئے ہیں۔الائیڈ وڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتالوں میں علاج معالجہ کی مزید جدید طبی سہولیات کی فراہمی کے علاوہ تحصیل ہسپتالوں کی حالت زار سنوارنے،الائیڈ ہسپتال میں بریسٹ کلینک کا قیام، شہر کے جنوبی حصے حسیب شہید کالونی میں اڑھائی سو بیڈز کانیا ہسپتال تعمیر کیاجارہا ہے ۔وزیراعلیٰ پنجاب کے خصوصی اقدامات سے ایشیاء کا دوسرابڑا چلڈرن ہسپتال صوبہ بھر کے مریض بچوں کو علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کررہا ہے اور اس ہسپتال کے دوسرے مرحلے پر بھی کام کاآغاز ہوچکا ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف صوبہ میں صحت کی سہولیات عام مریضوں تک پہنچانے کے لئے ہمیشہ فکر مند رہتے ہیں ۔اس مقصد کے لئے دستیاب وسائل کا بڑا حصہ شعبہ صحت پرخرچ کیا جارہا ہے۔ہسپتالوں میں اضافی سی ٹی سکین مشینوں سمیت دیگر طبی مشینری کی فراہمی اور اپ گریڈیشن کے علاوہ علاج معالجہ کیلئے طبی وتشخیصی وسائل میں اضافہ کیاجارہا ہے۔ان اقدامات پر عملدرآمد کاجائزہ لینے کے لئے وزیراعلیٰ پنجاب خود بھی اکثرہسپتالوں میں اچانک معائنہ کرتے ہیں جو ان کی صحت کی سہولتوں کے ثمرات عام مریضوں تک پہنچانے کے عزم کی واضح دلیل ہے۔وزیراعلیٰ نے صحت کے شعبے میں اقدامات پر عملدرآمد کے لئے انڈیکیٹرز بھی مقررکررکھے ہیں تاکہ نہ صرف کارکردگی کامعیار بہترہو بلکہ کسی جگہ خامیوں،کوتاہیوں اور کمزوریوں کی بھی نشاندہی ہوسکے۔اس مقصد کے لئے ہرضلع میں ڈسٹرکٹ ہیلتھ ریویوکمیٹیزہر ماہ انڈیکیٹرز پر عملدرآمد کاجائزہ لے رہی ہیں ۔ان اقدامات سے مطلوبہ اہداف حاصل کرنے میں مدد مل رہی ہے۔مزیدبرآں نائب قاصد اور خاکروب سے لیکر سپیشلسٹ ڈاکٹرز تک مطلوبہ انڈیکیٹرز حاصل کرنے والوں کو کیش ایوارسے بھی نوازا جارہاہے جس سے محکمہ صحت میں خدمات انجام دینے والوں کی بھرپور حوصلہ افزائی ہورہی ہے۔یہ تمام اقدامات اس ویژن کی عکاسی کرتے ہیں کہ عام آدمی کو علاج معالجہ کی بہترین سہولیات ان کی دہلیز پر میسر آئیں یہی وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف کا مشن ہے جس کی تکمیل کیلئے تیزی سے قدم آگے بڑھ رہے ہیں۔

پنجاب حکومت کی صحت کے میدان میں کارکردگی بارے

ڈی جی پی آر میں خدمات سرانجام دینے والے محمداویس عابدکامؤقف

Related posts

Leave a Comment