پولیس سرپرستی میں خطرناک جیب تراش گینگ انارکلی بازار میں سرگرم

فیصل آباد (نیوز لائن) فیصل آباد کے اہم کاروباری مرکز انارکلی میں خطرناک جیب تراش گینگ سرگرم ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ گینگ میں نصف درجن لڑکوں کے علاوہ درجن سے زائد لڑکیاں بھی شامل ہیں۔ منظم گینگ روزانہ انارکلی بازار میں روزانہ دس سے بیس وارداتیں کرکے خواتین کو کنگال کرتا ہے۔ متعدد خواتین واردات پر رونا دھونا بھی شروع کردیتی ہیں۔ نیوز لائن کے مطابق فیصل آباد کے اہم کاروباری مرکز انارکلی میں خواتین اور مردوں پر مشتمل جیب تراش گینگ سرگرم ہونے کی رپورٹ سامنے آئی ہے۔ جیب تراش گینگ کو انارکلی بازار اور جھنگ بازار کی درمیانی گلی میں رہائش پذیر ایک بااثر فیملی کی پشت پناہی بھی حاصل ہے جبکہ تھانہ کوتوالی کا ایک ظفرا نامی ”حوالدار“ بھی اس گینگ کی پشت پناہی کررہا ہے۔ ذرائع کے مطابق ملک گینگ کے نامی سے مشہور اس جیب تراش گینگ میں درجن بھر لڑکیاں بھی شامل ہیں جبکہ جیب تراش لڑکوں کی بڑی تعداد بھی اس گینگ کا حصہ ہے۔ گینگ انار کلی بازار اور اس کے گردونواح میں جیب تراشی ‘پرس چھیننے ‘ پرس سے رقوم نکالنے کی وارداتیں کرتا ہے۔ انار کلی بازار ‘ بانو مارکیٹ ‘ لبرٹی بازار‘ ریگل روڈ اور اس کی ارد گرد کی مارکیٹوں میں آنیوالی خواتین ان کا خاص نشانہ ہوتی ہیں۔ واردات کا فوری پتہ چل جانے پر واردات کرنے والے کو فرار کرانے میں بھی اس گینگ کی پشت پناہی کرنیوالے مدد کرتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق تھانہ کوتوالی اور تھانہ جھنگ بازار پولیس کو اس گینگ کے بارے میں مکمل رپورٹ حاصل ہے مگر ”سب “کی مددکرنے والے حوالدار ظفرا کی ”امداد “ کی وجہ سے پولیس اس گینگ کیخلاف کارروائی کرنے سے گریزاں رہتی ہے۔ قانونی چکر میں پھنس جانے پر اس گینگ کے افراد کو مدعی سے بچانے اور کیس کو جھوٹا ثابت کرنے میں بھی پولیس ہی مدد کرتی ہے۔

Related posts