جی سی یونیورسٹی: فیشن اینڈ آرٹ کا12 سال بعد بورڈ آف سٹڈیز اجلاس

فیصل آباد (نیوز لائن) کوالٹی ایجوکیشن کے بلند بانگ دعوے کرنے والی جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کے فیشن اینڈ آرٹ ڈیپارٹمنٹ نے12 سال تک اپنے بورڈ آف سٹڈیز کا اجلاس کرانا بھی گوارہ نہ کیا۔ایک دہائی سے بھی زائد عرصہ تک بورڈ آف سٹڈیز سے منظور کروائے بغیر طلبہ کے تھیسس اور پراجیکٹ منظور ہوتے رہے۔ سکیم آف سٹڈیز ‘ ایکسٹرنل ماہرین اور انٹرنل ماہرین کی منظوری بھی بورڈ آف سٹڈیز سے لئے بغیر ہی معاملات چلائے جاتے رہے۔ نیوز لائن کے مطابق جی سی یونیورسٹی کی فیکلٹی آف سوشل سائنسز کے ڈیپارٹمنٹ فیشن اینڈ آرٹ نے بارہ برس تک اپنے بورڈ آف سٹڈیز کا اجلاس بلائے بغیر ہی معاملات چلانے کا ریکارڈ قائم کردیا۔ یونیورسٹی ذرائع کے مطابق فیشن اینڈ آرٹ ڈیپارٹمنٹ کے بورڈ آف سٹڈیز کا آخری اجلاس 2007 میں ہوا تھا۔ اس کے بعد ڈیپارٹمنٹ کو اولڈ کیمپس سے منتقل کرکے یوپی چرچ کے قریب الگ عمارت میں قائم کردیا گیا۔ الگ عمارت میں آنے کے بعد فیشن اینڈ آرٹ ڈیپارٹمنٹ نے یونیورسٹی کے تمام قواعد و ضوابط کو درخور اعتنا نہ سمجھا۔ بورڈ آف سٹڈیز کی منظوری کے بغیر طلبہ کے پراجیکٹ اور تھیسس کروائے جاتے رہے۔ ایکسٹرنل ماہرین اور انٹرنل ماہرین کی لسٹیں بورڈ سٹڈیز سے منظور کروائے بغیر ہی ریسرچ کروائی جاتی رہی۔ ڈیپارٹمنٹ کی سکیم آف سٹڈی بھی بورڈ آف سٹڈی سے منظور کروائے بغیر ہی چلائی جاتی رہی۔ سکیم آف سٹڈی میں وقت کے ساتھ تبدیلی ہوئی نہ جدت لائی گئی۔ ایک دہائی سے بھی زائد عرصہ تک بورڈ آف سٹڈیز کے بغیر معاملات چلائے جانے کا نوٹس ڈاکٹر شہباز عارف اور ڈاکٹر مغیث سمیت کسی ڈین سوشل سائنسز نے لیا نہ ڈاکٹر ذاکر اور ڈاکٹر محمد علی سمیت کسی وائس چانسلر نے لیا۔ نیوز لائن کے مطابق بارہ سال کے طویل دورانیہ کے بعد جی سی یونیورسٹی کے ڈیپارٹمنٹ کا فیشن اینڈ آرٹ کے بورڈ آف سٹڈیز کا اجلاس 2019 میں ہوا۔بارہ برس بعد ڈیپارٹمنٹ کی سکیم آف سٹڈیز منظور ہوئی اور ایکسٹرنل و انٹرنل ماہرین کی منظوری دی گئی۔اور ڈیپارٹمنٹ کے دیگر معاملات پر تفصیلی غور و خوض کے بعد اہم فیصلے کئے گئے۔

Related posts