جی سی یونیورسٹی:اچانک چھٹیوں میں اضافہ‘ لڑکیاں ہوسٹل سے بے دخل

فیصل آباد (نیوز لائن) جی سی یونیورسٹی فیصل آباد نے موسم سرما کی چھٹیاں ختم ہونے کے بعد اچانک ان میں تین دن کا اضافہ کردیا ہے جبکہ چھٹیاں ختم ہونے کے بعد کلاسز لینے کیلئے دور دراز کے شہروں سے واپس آنیوالی طالبات کو یونیورسٹی کے ہوسٹلوں سے چند منٹوں کے نوٹس پر بے دخل کردیا گیا۔نیوز لائن کے مطابق جی سی یونیورسٹی فیصل آباد نے طلبہ کیلئے موسم سرما کی چھٹیاں 23دسمبر سے 31دسمبر تک کی تھیں اور طلبہ کو یکم جنوری کو کلاسز کیلئے واپس آنے کی ہدائت کی گئی تھی۔ چھٹیوں کے باعث یونیورسٹی ہوسٹل بھی طالبات کیلئے بند کردئیے گئے تھے تاہم طالبات کو 31دسمبر سے یونیورسٹی ہوسٹل میں واپس آنے کی اجازت تھی۔ ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب نے اچانک 31دسمبر کی شام ایک نوٹیفکیشن جاری کرکے یونیورسٹیوں کو حکم دیدیا کہ چھٹیوں میں اضافہ کیا جائے اور سکولوں و کالجوں کی طرح یونیورسٹیوں کے طلبہ کو بھی چھے جنوری کو ہی واپس بلایا جائے۔ 31دسمبر کو یونیورسٹی کے انتظامی اوقات ختم ہونے کے بعد منظر عام پر آنیوالے ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب کے حکم نامے پرجی سی یونیورسٹی فیصل آباد کی انتظامیہ عمل ہی نہ کرسکی۔ یکم جنوری کی صبح یونیورسٹی کے وائس چانسلر آفس کا عملہ بھی چھٹیوں میں اضافے سے لاعلم تھا۔ وی سی آفس سمیت یونیورسٹی کے تمام انتظامی دفاتر سے رابطہ کرنے والوں کو چھٹیاں ختم ہونے اور یونیورسٹی کھلنے کی اطلاع دی جاتی رہی۔ یکم جنوری کو دن دس بجے کے بعد اچانک یونیورسٹی انتظامیہ نے چھٹیوں میں اضافے کا اعلان کردیا۔ یونیورسٹی آنیوالے طلبہ کو باہر نکالنا شروع کردیا گیا۔ یونیورسٹی پہنچنے پر طلبہ کو چھٹیوں کی اطلاع دے کر گیٹ سے واپس بھجوایا جاتا رہا۔ یونیورسٹی کے داخلی گیٹ پر طلبہ اور گارڈز کے مابین تلخ کلامی بھی ہوتی رہی۔ یونیورسٹی کی چیئرپرسن ہال کونسل نے کمال ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے چھٹیوں میں اضافے کی ”نوید“ سنتے ہی یونیورسٹی کے گرلز ہاسٹلز کو طالبات کیلئے فوری بند کردیا۔ ہوسٹلوں میں واپس آچکی طالبات سے چند منٹوں کے نوٹس پر ہوسٹل خالی کروائے گئے۔ اور انہیں چند منٹوں کے نوٹس پر ہوسٹلوں سے نکال باہر کیا گیا۔ کئی گھنٹوں کا سفر کرکے واپس آنیوالی طالبات کے احتجاج کو نظرا نداز کرکے ہوسٹلوں سے نکالا گیا۔ انہیں ایک دن کی مہلت دینے سے بھی انکار کردیا گیا اور ہوسٹلوں کو دوپہر سے قبل خالی کرکے طالبات کو نکال باہر کیا گیا۔

Related posts