جی سی یونیورسٹی فیصل آبادکا طالبات کو ہاسٹلز سے تمام سامان اٹھانے کا حکم

فیصل آباد (ندیم جاوید) جی سی یونیورسٹی فیصل آباد نے لاک ڈاؤن کے تین ماہ بعد ہاسٹلز میں مقیم رہنے والی طالبات کو ہنگامی احکامات کے تحت فوری یونیورسٹی آکر اپنا تمام سامان اٹھانے کا حکم نامہ جاری کردیا ۔ طالبات کو دو دن کا وقت دیا گیا ہے اور حکم دیا گیا ہے کہ اس دوران آکر اپنا تمام تر سامان اٹھا لے جائیں بصورت دیگر ہاسٹل انتظامیہ ان کے سامان کی ذمہ دار نہیں ہو گی۔ یونیورسٹی کے ترجمان نے ایسے احکامات جاری کئے جانے کی تصدیق کی ۔ نیوز لائن کے مطابق جی سی یونیورسٹی فیصل آباد نے اپنے نیو کیمپس کے ہاسٹلز میں مقیم رہنے والی طالبات کو احکامات جاری کئے ہیں کہ فوری طور پر اپنے گھروں سے واپس یونیورسٹی آئیں اور ہاسٹلز میں موجود اپنا تمام سامان اٹھا لے جائیں۔ طالبات کو احکامات دئیے گئے ہیں کہ مقررہ تاریخ کو یونیورسٹی آکر سامان نہ اٹھانے کی صورت میں یونیورسٹی ان کے سامان کی ذمہ دار نہیں ہو گی۔ طالبات کو گھر سے ہی ٹرانسپورٹ ساتھ لانے اور فوری سامان اٹھا کر چلے جانے کا حکم دیا گیا ہے ۔ذرائع کے مطابق یونیورسٹی انتظامیہ نے کمال ہوشیاری کا مظاہرہ کرتے ہوئے آفیشل طور پر ایسا کوئی حکم جاری ہی نہیں کیا تاہم طالبات کو ہیڈ گرل ‘ ہاسٹل سپرنٹنڈنٹ ‘اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ اور دیگر ذرائع سے آگاہ کیا گیا ہے کہ سامان اٹھا لیں وگرنہ سامان ٹوٹنے ، خراب ہونے اور گم ہونے کی ہاسٹل انتطامیہ ذمہ دار نہ ہو گی۔ اس حوالے سے سامنے آیا ہے کہ یونیورسٹی کے ہاسٹلز میں مقیم طالبات کی اکثریت دور دراز کے علاقوں سے تعلق رکھتی ہیں۔ بعض طالبات گلگت بلتستان، بلوچستان اور کے پی کے کی بھی ہیں۔ رحیم یار خان، ڈی جی خان اور پنجاب کے دیگر دور دراز کے علاقوں کی طالبات ہاسٹلز میں مقیم ہیں۔ لاک ڈاؤن کے ماحول میں جب ملک بھر میں ٹرانسپورٹ کے شدید مسائل ہیں طالبات کا دور دراز سے صرف اپنا سامان اٹھانے کیلئے آنا ممکن نہیں ہے۔جی سی یونیورسٹی انتظامیہ کی طرف سے طالبات کو ہاسٹل مکمل طور پر خالی کروانے کا فیصلہ ایسے وقت میں سامنے آیا ہے کہ لاک ڈاؤن کو تین ماہ سے زائد وقت ہوچکا ہے۔ فیصل آباد میں بیرون ملک سے آنیوالوں کیلئے قرنطینہ سنٹر انہی ہاسٹلز میں بنائے گئے تھے جو کہ اب ختم کردئیے گئے ہیں۔ وفاقی حکومت کے ذمہ داران اور ایچ ای سی یونیورسٹیوں کو کھولنے اور دور دراز کے طلبہ کو یونیورسٹیوں میں بلانے کے آپشن پر سنجیدگی سے غور کررہے ہیں لیکن جی سی یونیورسٹی فیصل آباد کی انتظامیہ نے انوکھی منطق اپناتے ہوئے طالبات کو ہنگامی بنیادوں پر طلب کر کے سامان اٹھا لے جانے کے احکامات دے دئیے ہیں۔ اس حوالے سے رابطہ کرنے پر یونیورسٹی کے ترجمان ذیشان احمد کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی نے ہاسٹلز سے سامان اٹھانے کا حکم اجتماعی مفاد میں دیا ہے۔ طالبات کو مقررہ تاریخ اور وقت بتا دیا گیا ہے انہیں اس پر عمل کرنا چاہئے۔ اس حوالے سے یونیورسٹی کی چیئرپرسن ہال کونسل ڈاکٹر طیبہ سلطانہ کا کہنا تھا کہ طالبات کو سامان اٹھانے کیلئے اوقات سے آگاہ کردیا گیا ہے اور وہ اپنا سامان اٹھا سکتی ہیں۔ تاہم اگر کوئی طالبہ کسی مجبوری کی وجہ سے نہیں آسکتی تو ہاسٹل انتظامیہ کو یا براہ راست انہیں بھی آگاہ کرسکتی ہے ۔ نہ آنیوالی طالبات کے سامان کی یونیورسٹی حفاظت کرے گی اس کیلئے ہم انتظامات کرلیں گے۔

Related posts