یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب فیصل آباد کیمپس ایک مرتبہ پھر غیرقانونی قرار

فیصل آباد ( احمد یٰسین) پنجاب حکومت نے یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب کے فیصل آباد سمیت آٹھ شہروں میں کیمپس غیرقانونی قرار دیتے ہوئے ان میں داخلوں پر پابندی عائد کردی ہے۔ اور طلبہ کے نام الرٹ جاری کیا ہے کہ اس کیمپس میں کسی طور داخلہ نہ لیا جائے۔ فیصل آباد کے علاوہ یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب کے بہاولپور’ گوجرانوالہ’ گجرات’ ملتان ‘ راولپنڈی’ سرگودھا اور سیالکوٹ میں بنائے گئے کیمپس بھی غیرقانونی قرار دے دئے گئے ہیں ۔ پنجاب حکومت سے بہت پہلے ہائیر ایجوکیشن کمیشن آف پاکستان نے یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب کے فیصل آباد کیمپس کو غیرقانونی قرار دیا تھا اور اس میں داخلوں پر پابندی عائد کی ہوئی ہے۔

نیوز لائن کے مطابق دنیا میڈیا گروپ کے مالک میاں عامر محمود نے کئی سالوں سے اپنی نجی یونیورسٹی کا کیمپس غیرقانونی طور پر فیصل آباد میں قائم کررکھا تھا۔ اور دھوکہ دہی سے کام لیتے ہوئے اس کیمپس میں غریب و سادہ لوح شہریوں کو جال میں پھنسا کر غیرقانونی طریقے سے داخلے کئے جارہے تھے اور انہیں غیرقانونی طریقے سے تعلیم دی جارہی تھی۔ یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب کے فیصل آباد کیمپس کی انتظامیہ نے طلبا ء وطالبات کو سہانے خواب دکھا کر غیرقانونی ادارے میں داخلے کئے اور طلباء طالبات کا مستقبل تاریک کردیا۔ذرائع کے مطابق ہائیر ایجوکیشن کمیشن نے ابتداء میں ہی یو سی پی کے فیصل آباد کیمپس کو غیرقانونی قرار دیدیا تھا اور اس میں داخلوں سے روکا تھا لیکن میڈیا کی طاقت اور دیگر ذرائع سے اپنا اثرورسوخ استعمال کرکے میاں عامر محمود نے یو سی پی کے غیرقانونی کیمپس کیخلاف کارروائی رکوا لی۔ اور بدستور داخلے جاری رکھے۔

فیصل آباد سمیت ملک بھر کی یونیورسٹیاں یو سی پی فیصل آباد کیمپس میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ کو ہائیر کلاسز میں داخلے نہیں دے رہیں اور ان طلبہ کے مستقبل پر سوالیہ نشان لگ چکا ہے ۔دنیا میڈیا گروپ کے مالک اور یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب کے سی ای او میاں عامر محمود نے فیصل آباد کے غیر قانونی کیمپس پر ہی اکتفا نہ کیا بلکہ فیصل آباد کے علاوہ مزید سات شہروں میں یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب کے غیرقانونی کیمپس قائم کئے۔ ملتان’ بہاولپور’ گوجرانوالہ’ گجرات’ راولپنڈی’ سرگودھا اور سیالکوٹ میں بنائے گئے یو سی پی کے کیمپسز غیرقانونی ہونے کے باوجود یو سی پی کی انتظامیہ نے اپنا اثرورسوخ استعمال کرکے طلباء و طالبات کے داخلے کئے اور ان کا مستقبل تاریک کرنے کا سلسلہ جاری رکھا۔

پنجاب حکومت کے وزیر ہائیر ایجوکیشن یاسرہمایوں نے اس حوالے سے آنیوالے سینکڑوں شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے معاملے کی انکوائری کا حکم دیا تھا۔ اب صوبائی ہائیر ایجوکیشن کمیشن نے باضابطہ طور پر سٹوڈنٹ الرٹ جاری کردیا ہے جس میں طلبہ کو واضح ہدائت کی گئی ہے کہ یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب لاہور کے فیصل آباد ‘ سرگودھا’ راولپنڈی ‘ملتان ‘بہاولپور’ گوجرانوالہ’ گجرات’ اور سیالکوٹ میں بنائے گئے کیمپس میں داخلہ نہ لیا جائے ان آٹھوں شہروں میں قائم کیمپس پنجاب حکومت سے منظور کردہ نہیں ہیں ۔ اس حوالے سے یو سی پی انتظامیہ کا مؤقف لینے کیلئے فیصل آباد کیمپس کے نگران افضل بٹ اور پنجاب گروپ آف کالجز و یو سی پی فیصل آباد کے ڈائریکٹر رفعت اقبال سے رابطہ کیا گیا مگر دونوں حضرات نے اس حوالے سے یو سی پی انتظامیہ کا مؤقف دینے سے احتراز کیا۔

Related posts