گھروں میں لوڈ شیڈنگ کرکے انڈسٹری کو غیرقانونی گیس سپلائی کا انکشاف


فیصل آباد (احمد یٰسین) گھریلو صارفین کیلئے کئی کئی گھنٹے گیس کی لوڈ شیڈنگ کرکے انڈسٹری اور سی این جی سٹیشنوں کو غیرقانونی‘ خلاف قواعد اور معاہدے کے برعکس گیس سپلائی کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ سوئی ناردرن گیس کمپنی کے حکام نے غیرقانونی اقدام کا ’’مدا‘‘ پی ٹی آئی حکومت کی اعلیٰ شخصیات پر ڈال دیا۔ نیوزلائن کے مطابق پنجاب میں گھریلو صارفین کیلئے گیس کی لوڈ شیڈنگ پی ٹی آئی حکومت کی اعلیٰ شخصیات اور سوئی ناردرن گیس کمپنی کے حکام باہم ملی بھگت کرکے باقاعدہ سازش کے تحت کررہے ہیں۔ جبکہ انڈسٹری کو خلاف قواعد اور معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے غیرقانونی طور پر گیس سپلائی کئے جانے کا بھی انکشاف ہوا ہے۔نیوزلائن کے مطابق انڈسٹری کو گیس کی سپلائی کا معاہدہ ہی صرف 9ماہ کا ہوتا ہے اور قواعد کی رو سے انڈسٹری کو پورا سال گیس سپلائی کرنا خلاف قانون اور معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔ صنعتکاروں کی طرف سے سارا سال گیس سپلائی کرنے کا مطالبہ بھی قانون کی کھلی خلاف ورزی کے زمرے میں آتا ہے۔ انڈسٹری کی طرح سی این جی سٹیشنوں کیساتھ بھی گیس سپلائی کا معاہدہ پورے سال کیلئے نہیں ہوتا۔ اور گیس کمپنی صرف 9ماہ کیلئے گیس سپلائی کرنے کی پابند ہوتی ہے۔ ایس این جی پی ایل ذرائع کے مطابق انڈسٹری کو گیس کی سپلائی کا پیمانہ مقرر ہوتا ہے اور کوئی بھی صنعتی یونٹ معاہدے میں درج ڈیمانڈ سے زائدگیس حاصل نہیں کرسکتا ۔

اس خبر کو بھی پڑھیں ۔۔ مذموم مقاصد کیلئے مصنوعی ٹیکسٹائل بحران‘اصل کہانی کیا ہے۔

فیصل آباد سمیت پنجاب کے مخصوص علاقوں کی انڈسٹری مجموعی ڈیمانڈ سے دوگنا زائد گیس حاصل کررہی ہے۔ جبکہ ان کو سپلائی بھی 9ماہ کی بجائے 12ماہ کی جارہی ہے۔ صنعتکارروں کے اثرورسوخ اور صنعتی تنظیموں کی بلیک میلنگ کی وجہ سے ایس این جی پی ایل حکام قانون کی کھلی خلاف ورزی کے باوجود ان کے خلاف ایکشن نہیں لے پا رہے۔ذرائع کے مطابق انڈسٹری کو زائد مہینوں کیلئے اور ڈیمانڈ سے اضافی گیس سپلائی کرنے کیلئے گھریلو صارفین کیلئے جان بوجھ کر گیس کی غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے۔ اس حوالے سے ایس این جی پی ایل حکام کا کہنا ہے کہ اعلیٰ حکومتی شخصیات کے کہنے پر گھریلو صارفین کو سپلائی روکی اور انڈسٹری کو اضافی اور غیرقانونی گیس سپلائی کی جارہی ہے ۔

Related posts