مجھ سے کام نہیں ہوتا: اے سی سٹی رمضان بازاروں کا انتظام چلانے سے انکاری

فیصل آباد (احمد یٰسین) اے سی سٹی نے کام کی زیادتی کا رونا روتے ہوئے رمضان بازاروں کے انتظامات سے جان چھڑانے کی کوششیں شروع کردیں۔ رمضان بازاروں میں مسلسل بدانتظامی پر ڈپٹی کمشنر کی جانب سے سرزنش کے بعد اے سی سٹی نے سٹی ایریا میں لگائے گئے رمضان بازاروں کی ذمہ داری نبھانے سے انکار کردیا اور رمضان بازاروں کا چارج کسی بھی دوسرے آفیسر کو دینے کی استدعا کردی۔ نیوز لائن کے مطابق اے سی سٹی فیصل آباد شمائلہ منظور نے ڈپٹی کمشنر کو مراسلہ بھجوایا ہے کہ سٹی ایریا میں لگائے گئے 12 رمضان بازاروں کے انتظامات چلانا ان کیلئے ممکن نہیں ہے۔ اس لئے رمضان بازاروں کا چارج کسی دوسرے آفیسر کو دیدیا جائے۔مراسلے میں اے سی سٹی نے اس کی وجہ کام کی زیادتی بتائی ہے۔ ذرائع کے مطابق رمضان بازاروں کے اچانک دوروں کے دوران ڈپٹی کمشنر نے مختلف رمضان بازاروں میں بدانتظامی پائی تو اس پر اے سی سٹی کی سرزنش کی۔ سٹی ایریا کے تمام رمضان بازاروں سے بد انتظامی’ مہنگی اشیاء بیچے جانے’ شہریوں کو سہولیات فراہم نہ کرنے’ بازاروں کے عملے اور دکانداروں کی جانب سے صارفین کے ساتھ غیرمناسب رویہ رکھنے’ حکومتی سبسڈی کی بناء پر سستی کی گئی اشیاء بازاروں میں دستیاب نہ ہونے اور سبسڈی والی اشیاء اوپن مارکیٹ میں مہنگے داموں فروخت کئے جانے کی اطلاعات سامنے آرہی ہیں۔ ایسے میں اے سی سٹی اپنی ذمہ داری نبھانے کی بجائے اپنے فرض سے پہلو تہی کرتے ہوئے بھاگنے کی کوشش میں ہیں۔ نیوز لائن کے مطابق قواعد کی رو سے اے سی سٹی اپنے علاقے میں ہونے والے تمام معاملات کی انتظامی طور پر ذمہ دار ہیں۔ ڈپٹی کمشنر کی جانب سے رمضان بازاروں کا چارج عملی طور پر کسی دوسرے آفیسر کو دے بھی دیا جائے تو اے سی سٹی کی بطور” اسسٹنٹ کمشنر سٹی” یہ ذمہ داری پھر بھی برقرار رہے گی کہ رمضان بازاروں کے معاملات کو بہتر بنانا یقینی بنائیں۔

Related posts