پنجاب میں شدید ترین سموگ کا خدشہ: بھٹے‘ انڈسٹری بند کرنیکا فیصلہ

فیصل آباد (احمد یٰسین) پنجاب میں شدید ترین دھند اور سموگ کا خدشہ قرار دیا جارہا ہے۔ فیصل آباد سمیت آدھا پنجاب سموگ کے خدشہ کے حوالے سے خطرناک ترین قرار دئیے گئے ریڈ زون میں شامل ہے اور شدید ترین سموگ کے پیش نظر ان علاقوں میں بھٹہ اور خطرناک آلودگی پھیلانے کا باعث بننے والی انڈسٹری مکمل طور پر بند رکھی جائے گی۔ نیوز لائن کے مطابق پنجاب حکومت نے صوبہ بھر کے 36اضلاع کو سموگ کے خدشہ کے پیش نظر تین زون میں تقسیم کیا ہے۔ فیصل آباد کو سب سے خطرناک قرار دئیے جانیوالے ریڈ زون میں رکھا گیا ہے۔ فیصل آباد کے علاوہ صوبائی دارالحکومت لاہور‘راولپنڈی‘ شیخوپورہ‘قصور‘ نارووال‘ حافظ آباد‘ ننکانہ صاحب‘ چنیوٹ‘ جھنگ‘ اوکاڑہ‘ ساہیوال‘ پاکپتن‘ خانیوال‘ ملتان‘ وہاڑی اوربہاول پور بھی ریڈ زون میں شامل ہیں۔ سموگ کے کم خطرہ کا شکار چھے اضلاع ییلو زون میں رکھے گئے ہیں اور ان میں سرگودہا‘ ٹوبہ ٹیک سنگھ‘سیالکوٹ‘منڈی بہاوالدین‘ مظفرگڑہ اورلودھراں شامل ہیں۔سموگ کے خطرہ سے آزاد 12اضلاع میں اٹک،جہلم،گجرات،خوشاب،میانوالی، بھکر،لیہ،ڈیرہ غازی خان،راجن پوراوررحیم یارخان شامل ہیں۔ ریڈزون کے 18اضلاع کے سینکڑوں بھٹہ جات اگلے ہفتے بندکرنے کے احکامات جاری کردئیے جائیں گے جبکہ آلودگی پھیلانے والی انڈسٹری کو بھی بند کرنے کے احکامات جاری ہوسکتے ہیں۔ گرین زون کے 12اضلاع کے بھٹہ جات اور انڈسٹری چلتی رہے گی جبکہ ییلوزون کے 6اضلاع میں انڈسٹری اور بھٹے چلنے کا انحصار محکمہ تحفظ ماحول کی رپورٹس پر ہو گا۔

Related posts