سابق میئر کی کرپشن کو تحفظ دینے کیلئے بلدیاتی نمائندے میدان میں آگئے

فیصل آباد (نیوز لائن) شہباز شریف دور کے میئر فیصل آباد کی کر پشن بے نقاب ہوتے ہی ن لیگی بلدیاتی نمائندے تلملانے لگے اور رزاق ملک کے حق میں سپانسرڈ پریس کانفرنس کر ڈالی۔ تفصیلی انکوائری اور دستاویزی ثبوتوںکے ملاحظہ کے بعد درج ہونے والے کرپشن کے مقدمہ کا ثبوتوں اور گواہیوں کے ساتھ سامنے کرنے کی بجائے معاملے کو میڈیا کی منڈی میںلے آئے۔ پریس کانفرنس میںمیڈیا کے سوالوں کا جواب دینے کی بجائے آئیں بائیں شائیں کرکے میڈیا سے مدد کی اپیل کی جاتی رہی۔ تفصیل کے مطابق انٹی کرپشن ڈیپارٹمنٹ نے میاں شہباز شریف دور کے سابق میئر محمد رزاق ملک اور انکے نصف درجن ساتھیوں کیخلاف کرپشن کی ایف آئی آر درج کی ہے۔

ذرائع کے مطابق رزاق ملک اور ان کے ساتھیوں کیخلاف انٹی کرپشن تحقیقات خودمیاں شہباز شریف کے دور میں ہی شروع ہو گئی تھیں۔ تحقیقات کروانے والوں کا تعلق بھی مسلم لیگ ن سے ہی بتایا جاتا ہے ۔ انکوائری میں رزاق ملک اور ان کے ساتھیوں سنگین کرپشن اور بد انتظامیوں کے مرتکب پائے گئے۔ انکوائری ٹیم نے معاملے کی تفصیلی تحقیقات اور میونسپل کارپوریشن کے ریکارڈ کا معائینہ کرنے کے بعد مقدمہ کے اندراج کی سفارش کی۔ انکوائری ٹیم کے سربراہ زاہد نظامی کا کہنا ہے کہ معاملے کی تفصیلی اور ہرپہلو سے تحقیقات کی گئی ہیں۔ تحقیقات میں کرپشن کے الزامات ثابت ہونے پر ہی مقدمہ کے اندراج کی سفارش کی گئی ہے۔ انکوائری ٹیم کی سفارشات پر ڈائریکٹر انٹی کرپشن نے ایف آئی آر درج کروا دی جس کے مدعی مسلم لیگ ن سے ہی تعلق رکھنے والے سابق ممبر میونسپل کارپوریشن اور رزاق ملک کیخلاف میئرکا الیکشن لڑنے والے شیراز کاہلوں ہیں۔

سابق میئر رزاق ملک کیخلاف مقدمہ کا اندراج ہوتے ہی سابق ایم پی اے ملک نواز نے اپنے بھائی کے حق میں ن لیگی بلدیاتی نمائندوں کے ذریعے سپانسرڈ پریس کانفرنس کروا ڈالی ۔ رزاق ملک کے حق میں سپانسرڈ پریس کانفرنس کرنے والے عبدالغفور چوہدری ‘ امین بٹ‘ عاطف کسانہ‘ کاشف گجر‘ ہدائت انصاری و دیگران پریس کانفرنس میں سیاسی انتقام کا ”رٹہ رٹایا“سبق پڑھنے کے سوا کچھ نہ کہہ سکے۔مقدمہ کا مدعی بھی ن لیگی ہونے اور معاملے میں ن لیگ کی اہم شخصیات کے رزاق ملک کے خلاف ہونے کے بارے میں کچھ کہہ سکے نہ حقائق اور شواہد رزاق ملک کے خلاف ہونے بارے سوالوں کا جواب دے سکے۔ اور معاملے پر میڈیا کی ہمدردیاں لینے کی کوشش میں سرگرم رہے۔

Related posts