ایف ڈی اے کا دائرہ کار ایم تھری انڈسٹریل سٹیٹ تک بڑھانے کی منظوری

فیصل آباد (نیوز لائن) ایف ڈی اے گورننگ باڈی نے ایف ڈی اے اورواسا کے کنٹریکٹ ملازمین کو حکومت پنجاب کی پالیسی کے مطابق ریگولر کرنے کی منظوری دی ہے جبکہ نئے تقاضوں اور ضروریات کے تحت ایف ڈی اے کے دائرہ اختیار کی حدود میں توسیع کیلئے معاملہ برائے منظوری حکومت پنجاب کو بھجوانے کی سفارش کی گئی۔گورننگ باڈی کا اجلاس ایم پی اے میاں وارث عزیز کی زیر صدارت منعقدہواجنہیں اتفاق رائے سے اجلاس کا چیئرپرسن منتخب کیاگیاجس میں ارکان صوبائی اسمبلی چوہدری عادل پرویز گجر ،رائے فردوس ،ڈی جی ایف ڈی اے محمد سہیل خواجہ ،ایم ڈی واسا فقیرمحمد چوہدری،ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل عامر عزیز ودیگر اراکین جاوید شریف ،ماجد حسین ،چوہدری ناصر محمود ،سلطان اعظم،ڈویژنل کمشنر ،ڈپٹی کمشنر ،محکمہ لوکل گورنمنٹ ،ہاؤسنگ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ودیگر محکموں کے نمائندے اور ایف ڈی اے کے افسران موجود تھے۔ڈائریکٹر جنرل ایف ڈی اے نے گورننگ باڈی کے ارکان کا خیر مقدم کرتے ہوئے ایف ڈی اے اور واساکے انتظامی ودفتری امور کو مستحکم بنانے اور شہری ترقی کی سرگرمیوں میں قابل قدرمعاونت کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے چک جھمرہ ،جڑانوالہ ،سمندری ،ڈجکوٹ ودیگر سب تحصیلوں سمیت ایم تھری انڈسٹریل اسٹیٹ اور علامہ اقبال انڈسٹریل سٹی کے قیام کے پیش نظرحالات حاضرہ کے تقاضوں کے مطابق ایف ڈی اے کے دائرہ اختیار کی حدود میں توسیع کیلئے ضروری وضاحتیں پیش کیں جن کی گورننگ باڈی نے سفارش کرتے ہوئے یہ معاملہ منظوری کیلئے حکومت پنجاب کو بجھوانے کافیصلہ کیا گیا۔اجلاس کے دوران شرکاء نے غیر قانونی اور غیر منظور ہاؤسنگ سکیموں کے خلاف قانونی کارروائیوں کیلئے ڈائریکٹر جنرل کے مکمل اختیارات پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے بعض نجی ہاؤسنگ سکیموں کے ڈویلپرز کے ذمہ مختلف فیسوں اور جرمانوں کی مد میں چار ارب روپے سے زیادہ کے واجبات کی وصولی کیلئے نادھندگان کے عدم تعاون کی صورت میں تعمیرات کو مسمار ،سیل یا مقدمات درج کروانے کے فیصلے کی منظوری دی گئی۔اس موقع پر نجی ہاؤسنگ سکیموں میں مرکزی قبرستان قائم کرنے کی اجازت اور ایف ڈی اے سٹی میں کنٹین کے قیام کی منظوری دیتے ہوئے ہاؤسنگ سکیموں کے بیرونی ایریا میں دس فٹ جگہ پر برائے یوٹیلٹی کوریڈر وقف کرنے کی پابندی کی تجویز کو مزید غور وخوض کیلئے موخرکردیاگیا۔اجلاس میں شہر کی مختلف شاہرات وچوکوں کی ٹریفک انجینئرنگ و پلاننگ کے ذریعے ری ماڈلنگ کے سلسلے میں ٹیپا کو فعال بنانے اور شہر میں کسی بھی ترقیاتی منصوبے کی مالیت کاڈیڑھ فیصد ٹریفک انجینئرنگ و مینجمنٹ کیلئے مختص کرنے کی تجویز سے بھی اتفاق کیاگیااس موقع پر ایل ڈی اے کی طرف سے تیار کردہ بلڈنگز اینڈ زوننگ ریگو لیشنز 2019کو ایف ڈی اے کی طرف سے اختیار کرنے کی تجویز کی بھی منظوری دی گئی۔ایم ڈی واسا فقیر محمد چوہدری کی بریفنگ پر کمرشل واٹر فلٹریشن پلانٹس کے سروے اور پانی کے تجزیہ کے نتائج کاجائزہ لیتے ہوئے فروخت کئے جانے والے پانی کو صارفین کی صحت کے پیش نظرسائنسی اصولوں پر معیاری بنانے پر زور دیا گیا بصورت دیگر غیر معیاری اور ناقص پانی والے فلٹریشن پلانٹ کو سیل کرنے کا فیصلہ کیاگیا۔اجلاس کے دوران گورننگ باڈی کے ارکان کو مجوزہ فیصل آباد رنگ روڈ کے منصوبے کے ابتدائی سروے اور تجویز کردہ ایریاز کے بارے میں بریفنگ دی گئی جبکہ کینال روڈ پر کشمیر پل انڈر پاس کے میگا پراجیکٹ کی تعمیراتی پیش رفت سے آگاہ کرتے ہوئے درکار بقایا 38کروڑ روپے کے فنڈز کے حصول میں ارکان اسمبلی کی معاونت طلب کی گئی تاکہ اس منصوبہ کی آئندہ جون تک حتمی تکمیل ہوسکے۔ارکان اسمبلی اور دیگر ٹیکینکل ممبرز نے ایف ڈی اے کی کارکردگی کو بہتر بنانے اور عمدہ سروسز کیلئے نئے اقدامات کرنے پر ڈائریکٹر جنرل محمد سہیل خواجہ کی انتظامی کاوشوں کو سراہا اور کہاکہ ترقیاتی منصوبوں کے لئے حکومت پنجاب کے فنڈز کے حصول میں بھرپور معاونت کی جائے گی۔انہوں نے غیر قانونی ہاؤسنگ کالونیوں کے خلاف بلاامتیاز آپریشن جاری رکھنے پر زوردیااور کہاہے کہ غیر منظورشدہ ،غیرقانونی ہاؤسنگ سکیموں کے پلاٹس کی رجسٹری مکمل طور پر روکنے کیلئے ڈویژنل کمشنر اور ڈپٹی کمشنر سے رجوع کیاجائے گاتاکہ عوام کو کسی بھی دھوکہ دہی یافراڈ سے بچایا جاسکے۔

Related posts