عید کا تحفہ : فیصل آباد میں آٹا نایاب’قیمتیں بھی آسمان سے باتیں کرنے لگیں

فیصل آباد (احمد یٰسین) فیصل آباد میں آٹا نایاب ہو گیا ہے۔ شہر کے متعدد علاقوں میں آٹا دستیاب ہی نہیں ہے۔ گلی محلے کی دکانوں کا تو کیا کہنا بڑے بڑے سٹورز پر بھی آٹا میسر نہیں ہے۔ یوٹیلیٹی سٹورز بھی آٹے کی فراہمی سے انکاری ہیں۔ جبکہ جہاں مل رہا ہے وہاں انتہائی مہنگے داموں ‘ کم مقدار میں اور شناختی کارڈز کی نقل جمع کرکے دیا جا رہا ہے۔ نیو زلائن کے مطابق فیصل آباد میں آٹا کی سپلائی بری طرح متاثر ہونے کی اطلاعات ہیں۔ شہر کے متعدد علاقوں میں آٹا دستیاب نہیں ہے۔ گلی محلوں کی دکانوں پر تو کیا میسر ہوگا بڑے بڑے سٹورز اور یوٹیلیٹی سٹورز پر بھی آٹا نہیں مل رہا۔ شہر کی گنجان آباد بستیوں سرسید ٹاؤن ‘ اسلام نگر’ منصور آباد’ چباں’ نور پور’ جوہر کالونی’ غلام محمد آباد’ رضا آباد’محمد پورہ ‘ پنج پیر’ منیر آباد’ کمال آباد’ محمد آباد’ ڈی ٹائپ کالونی’ علامہ اقبال کالونی’ وارث پورہ کے علاوہ پوش علاقوں مدینہ ٹاؤن’ سعید کالونی ‘ گلستان کالونی’ جناح کالونی’ گلبرگ سمیت شہر بھر میں آٹا کی دستیابی انتہائی نایاب ہے۔ شہر کی 70 فیصد سے زائد دکانوں پر آٹا میسر ہی نہیں ہے جبکہ جہاں مل رہا ہے وہاں بھی کم مقدار میں اور شناختی کارڈ کی نقول لے کر فراہم کیا جارہا ہے۔ شہر بھر کے یوٹیلیٹی سٹورز بھی آٹے کی فراہمی سے انکاری ہیں جبکہ میگا سٹورز بھی آٹا دستیاب نہیں ہے۔ جہاں اٹا مل رہا ہے وہاں بھی مہنگے داموں ہے۔ 20کلو آٹے کا تھیلا 860 کی بجائے ایک ہزار سے 1300 روپے تک دیا جا رہا ہے جبکہ چکیوں پر 65 سے 75 روپے فی کلو آٹا بیچا جا رہا ہے۔ آٹے کی سپلائی متاثر ہونے سے اور مہنگے داموں ملنے سے شہری شدید مشکلات اور پریشانی کا شکار ہیں ۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ جو حکومت عوام کو آٹے کی مقررہ نرخوں پر فراہمی یقینی نہیں بنا سکتی اسے اقتدار میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ پنجاب حکومت آٹے کی فراہمی یقینی نہیں بنا سکتی تو مستعفی ہو کر گھر چلی جائے۔ یوٹیلیٹی سٹور گلستان کالونی کے منیجرنے نیوز لائن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انہیں ادارے کی طرف سے آٹے کی سپلائی روک دی گئی ہے ۔ جب ادارہ ہی انہیں سپلائی نہیں دے رہا تو ہم کیسے لوگوں کو سپلائی دے سکتے ہیں۔ اس حوالے سے کریانہ سٹورز کے دکانداران نے نیوز لائن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فلور ملز مقررہ نرخوں پر آٹا دینے کو تیار نہیں ہیں۔ ایسے میں مہنگا آٹا خرید کر ہم کیسے سستا بیچ سکتے ہیں۔ مہنگا بیچتے ہیں تو سرکاری لوگ ہمیں تنگ کرتی ہے۔

Related posts