نصرت بھٹوکی آٹھویں برسی پر پیپلز پارٹی فیصل آباد کی خصوصی تقریب

فیصل آباد(نیوز لائن) مادر جمہوریت بیگم نصرت بھٹو جمہوریت کا ایک روشن استعارہ تھیں، ان کی تمام عمر جمہوریت کی مضبوطی اور جمہوری اداروں کے استحکام کیلئے جدوجہد میں گزری ہے۔ 1977 میں ایک سازش کے تحت جب ذوالفقارعلی بھٹو شہید کی عوامی اور آئینی حکومت کو گرا کر انہیں پابند سلاسل کر دیا گیا تو یہ نصرت بھٹو ہی تھیں کہ جنہوں نے جمہوریت، قانون اور آئین کی بالا دستی کیلئے اپنا الم بلند کیا اور ریاستی جبر اور آئین کی پائیمالی کیخلاف اس وقت کے جابر و آمر حکمرانوں کے خلاف ڈٹ کھڑی ہوئیں اور آئین کی بحالی کے لیے بھرپور آواز اٹھائی ان خیالات کا اظہار مادر جمہوریت بیگم نصرت بھٹو آٹھویں برسی کے موقع پر پاکستان پیپلز پارٹی سٹی فیصل آباد کے زیر اہتمام پرتاب نگر جھنگ روڈ میں منعقدہ ایک تقریب کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے سٹی صدر رانا نعیم دستگیر خاں نے کیا۔ اس موقع پر سنئیر رہنماماسٹر اشفاق احمد‘ ڈویژنل فنانس سیکرٹری میاں اشفاق حسین، سنئیر رہنما میاں امجد عزیز سنئیر نائب صدر شیخ محمد اسلام‘ انفرمیشن سیکرٹری رانا خاور جاوید‘ انچارج میڈیا سیل محمد اطہر شریف‘ ٹکٹ ہولڈرز چوہدری صادق جٹ‘ندیم غفاری‘قائم مقام جنرل سیکرٹری افتخار حلیم رضا کے ساتھ ساتھ کارکنوں کی ایک بڑی تعداد نے بھی اس پروگرام میں شرکت کی۔ رانا نعیم دستگیر خاں نے مزید کہا کہ یہ مادر جمہوریت محترمہ بیگم نصرت بھٹو کی انہی لازوال قربانیوں اور جدوجہد کی بدولت آج ملک میں جمہوریت قائم و دائم ہے جس پر قوم انہیں اور ان کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ اب وقت آ چکا ہے کہ قوم شہید ذوالفقار علی بھٹو کے بتائے ہوئے فلسفے اور نظریئے کی راہ پر چلتے ہوئے میثاق جمہوریت کے ایجنڈے کی جانب گامزن ہو تاکہ اس ملک میں حقیقی جمہوریت کا سورج ایک مرتبہ پھر سے طلوع ہو سکے۔ تقریب کے اختتام پر ان کی اور بھٹو خاندان کے شہدا کے ایصال ثواب کے لیے فاتحہ خوانی بھی کروائی گئی۔

Related posts