کشمالہ طارق کی خلاف میرٹ تقرری کیس کی سماعت شروع


لاہور (نیوزلائن) لاہور ہائیکورٹ نے وفاقی خاتون محتسب کشمالہ طارق کی میرٹ کے برعکس تقرری کے خلاف درخواست پرسماعت شروع کردی ہے ۔عدالت نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔ لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے کیس کی سماعت شروع کی تو درخواست گزار رحمت قریشی نے موقف اختیار کیا کہ کشمالہ طارق کو آئین اور قوانین کے برعکس وفاقی خاتون محتسب کے عہدے پر تعینات کیا گیا،کشمالہ طارق آئین کے آرٹیکل 193 کے تحت دی گئی اہلیت پر پورا نہیں اترتیں،آئین اور قوانین کے تحت ہائیکورٹ کا جج بننے کا اہل شخص ہی وفاقی محتسب بن سکتا ہے۔ لہٰذا معزز عدالت سے استدعا ہے کہ کشمالہ طارق کی غیر آئینی اور غیر قانونی تقرری کالعدم قرار دی جائے ، اس کے ساتھ حتمی فیصلے آنے تک کشمالہ طارق کو کام کرنے سے روکنے کے بھی احکامات صادر کیے جائیں ۔ جس پر فاضل عدالت نے وفاقی حکومت ،کشمالہ طارق اور دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔

Related posts