الیکشن کمیشن نے قومی اور چاروں صوبائی اسمبلیوں کے نتائج جاری کردئیے


اسلام آباد(نیوزلائن) الیکشن کمیشن نے قومی و صوبائی اسمبلیوں کے غیر حتمی نتائج جاری کر دیے ہیں ۔ قومی اسمبلی میں تحریک انصاف کو واضح برتری حاصل ہے لیکن حکومت بنانے کیلئے اسے دوسری جماعتوں کیساتھ اتحاد بنانے کی ضرورت محسوس ہورہی ہے۔ تحریک انصاف کی بلاشرکت غیرے حکومت بننا ممکن نہیں ہورہا ۔ ای سی پی کے جاری کردہ نتائج کے مطابق قومی اسمبلی میں تحریک انصاف 114 نشستیں جیت سکی ہے ۔ مسلم لیگ (ن) نے 64 جبکہ پیپلز پارٹی نے 43 نشستیں حاصل کی ہیں۔ متحدہ مجلس عمل کی 13 ، مسلم لیگ ق کی 5، ایم کیو ایم کی 6 ، جی ڈی اے 2 ، بلوچستان عوامی پارٹی 3، بلوچستان نیشنل پارٹی 2، جبکہ عوامی مسلم لیگ، پاکستان تحریک انسانیت، اے این پی کا ایک ایک امیدوار کامیاب ہوا ہے، اس کے علاوہ 13 آزاد امیدوار قومی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے ہیں۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ نتائج کے مطابق مسلم لیگ (ن) پنجاب اسمبلی میں 127 نشستوں کے ساتھ پہلے نمبر، تحریک انصاف 122 نشستوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے جب کہ29 حلقوں سے آزاد امیدواروں نے کامیابی حاصل کی۔ اس کے علاوہ پی ایم ایل (ق) 7، پیپلزپارٹی نے 6 اور دیگر جماعتوں نے 3 نشتیں حاصل کیں۔

الیکشن کمیشن نے صوبائی اسمبلی سندھ کے 120 حلقوں کے نتائج جاری کیے جس میں پیپلز پارٹی 72 نشستوں کے ساتھ سر فہرست، تحریک انصاف 22، ایک کیو ایم پاکستان 16، جی ڈی اے 11، تحریک لبیک پاکستان 2 جب کہ دیگر جماعتوں کی 3 نشتیں ہیں۔

خیبر پختونخوا اسمبلی کے 96 حلقوں کے نتائج کے مطابق تحریک انصاف 66 نشستوں کے ساتھ سر فہرست، ایم ایم اے 10 نشستوں کے ساتھ دوسرے جب کہ اے این پی 6 نشستوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے، کے پی اسمبلی میں (ن) لیگ نے 5 ، آزاد امیدوار 5 اور پیپلز پارٹی نے 4 نشستیں حاصل کیں۔

الیکشن کمیشن نے بلوچستان اسمبلی کے 45 حلقوں کے نتائج جاری کیے جس کے مطابق بی اے پی 13 نشستیں حاصل کر چکی ہے، ایم ایم اے 9 جب کہ 5 نشستوں پر آزاد امیدوار کامیاب ہوئے۔ اس کے علاوہ بی این پی 5، تحریک انصاف 4 اور دیگر جماعتوں نے 7 نشستیں حاصل کیں۔

Related posts