تمام سیاسی جماعتیں خواتین کو پانچ فیصد ٹکٹ دینے کی پابند


فیصل آباد(احمد یٰسین)الیکشن کمیشن آف پاکستان نے تمام سیاسی جماعتوں کو پابند کیا ہے کہ وہ جنرل سیٹوں پرخواتین کے انتخابی عمل میں حصہ لینے کی حوصلہ افزائی کریں۔ خواتین کے ووٹ کاسٹ کروانے کی کوشش کریں اور مخصوص نشستوں کے علاوہ جنرل سیٹوں پر اپنی ٹکٹوں میں سے خواتین کو پانچ فیصد ٹکٹیں لازمی دیں۔ نیوزلائن کے مطابق الیکشن کمیشن آف پاکستان نے تمام سیاسی جماعتوں کو ہدائت کی ہے کہ جنرل سیٹوں پر اپنے امیدوار نامزد کرتے ہوئے یقینی بنائیں کہ ہر اسمبلی کی جنرل سیٹوں کیلئے ان کے پانچ فیصد امیدوارخواتین ہوں۔الیکشن کمیشن نے عام انتخابات 2018کیلئے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی شق چھے میں اس حوالے سے تمام جماعتوں کو باضابطہ پابند کیا ہے ۔ یہ پابندی صرف الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق میں ہی نہیں بلکہ الیکشن ایکٹ 2017کی شق 26بھی اسی حوالے سے اور اس شق کے تحت ہی سیاسی جماعتوں کو پانچ فیصد ٹکٹ خواتین کو دینے کا پابند کیا گیا ہے۔ اس شق کی رو سے ملک بھر سے الیکشن لڑنے والی جماعتوں مسلم لیگ ن ‘ تحریک انصاف‘ پیپلزپارٹی ‘ ایم ایم اے‘ اے این پی‘ پی ایس پی‘ ایم کیو ایم و دیگر پابند ہیں کہ اگر وہ اسمبلی کی تمام نشستوں سے الیکشن میں حصہ لیتی ہیں تو قومی اسمبلی میں 14‘ پنجاب اسمبلی میں 15‘ سندھ اسمبلی میں سات‘ کے پی اسمبلی میں پانچ‘ بلوچستان اسمبلی میں تین ٹکٹ خواتین کو دیں۔ خواتین کو پانچ فیصد ٹکٹ نہ دینے والی سیاسی جماعتیں الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق2018 اور الیکشن ایکٹ 2017کی خلاف ورزی کی مرتکب ہوں گی اورایسی پارٹیوں پر پابندی کیلئے کارروائی بھی کی جاسکتی ہے۔

Related posts